امریکی سکالر نے فروری میں پاکستانی طیارہ گرانے کا بھارتی دعویٰ مسترد کر دیا

پاکستان کے ایف 16 طیاروں میں جی ای انجن نہیں،بھارتی ماہرین نے دعویٰ کیا کہ GE انجن کا ملبہ برآمد کیا گیا۔ امریکی سکالر

اسلام آباد : امریکہ کی جارج ٹاؤن یونیورسٹی میں ماہر سیاسیات کرسٹین فیئر نے اس امکان کو مسترد کیا ہے کہ بھارت نے فروری میں پاکستان کاF-16طیارہ مار گرایا تھا۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق چندی گڑھ میں ملٹری لٹریچر فیسٹیول میں سابق ائر چیف بی ایس دھنوئی اور دیگر بھارتی ماہرین کے ہمراہ ایک سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کرسٹین فیئر نے ایف 16گرانے کے دعوے کو ثابت کرنے کے لیے پیش کئے جانے والے ملبے کے ٹکڑوں کو متنازعہ بنادیا ۔
انہو ں نے کہاکہ پاکستان کے ایف 16 طیاروں میں جی ای انجن نہیں ہیں جبکہ چند بھارتی ماہرین نے دعویٰ کیا کہ GEانجن کا ملبہ برآمد کیا گیا ہے۔ کرسٹین فیئر نے بالاکوٹ میں تربیتی کیمپ کو نشانہ بنانے کے بھارتی دعوے کو بھی مسترد کردیا تاہم انہوں نے اس بات کو تسلیم کیا کہ بھارتی طیاروں نے پاکستان کے اندر حملہ کیا تھا۔ انہوں نے کچھ دعوؤں کو حقیقت سے کہیں دور قراردیتے ہوئے درست اندازے کے لیے گہری تحقیق کی ضرورت پر زوردیا۔
خیال رہے کہ رواں سال فروی میں پاک فضائیہ نے بھارتی فضائیہ کو بھی خوب مزہ چکھایا تھا جس سے عالمی سطح پر بھی پاک فضائیہ کی جوابی کارروائی کو خوب سراہا گیا تھا۔مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں 14 فروری کو ایک کار خود کش دھماکے میں 40 بھارتی فوجی ہلاک ہوئے تھے جس کا الزام بھارت نے براہ راست پاکستان پر عائد کیا تھا۔ پلوامہ واقعے کے بعد صورتحال کشیدہ ہوئی اور 26 فروری کی رات بھارتی فضائیہ نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کی جس پر پاک فضائیہ کی بروقت جوابی کارروائی پر بھارتی طیارے بالاکوٹ کے قریب نصب ہتھیار پھینکتے ہوئے بھاگ نکلے تھے۔
جس کے بعد بدھ کی صبح 27 فروری کو پاک فضائیہ نے بھارت کو سرپرائز دیتے ہوئے بھارت کے دو طیارے مار گرائے جبکہ ایک بھارتی پائلٹ کو بھی گرفتار کر لیا گیا تھا۔ پاک فوج نے ابھی نندن کو مشتعل ہجوم سے بچایا اور حراست میں لے لیا تھا۔ بھارتی پائلٹ ونگ کمانڈر ابھی نندن کی گرفتاری کے بعد سے بھارتی میڈیا میں یہ چرچا تھا کہ پاکستان اب پائلٹ کی رہائی کے لیے بھارت کے سامنے شرائط رکھے گا ، بھارتی حکومت نے مؤقف دیا کہ ہم کسی قسم کی شرائط ماننے کو تیار نہیں ہیں۔
لیکن بعدازاں پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان عمران خان نے بھارتی پائلٹ کی رہائی کا اعلان کیا اور ساتھ ہی کہا کہ ہم بھارتی پائلٹ کو امن کے فروغ کے لیے جذبہ خیر سگالی کے تحت رہا کر رہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کے اس فیصلے کو نہ صرف پاکستان اور بھارت بلکہ عالمی سطح پر بھی خوب سراہا گیا تھا۔یکم مارچ کو بھارتی پائلٹ ابھینندن کو پاکستان نے جذبہ خیر سگالی کے تحت واہگہ بارڈر پر بھارت کے حوالے کر دیا تھا۔

تاریخ اشاعت : پیر 16 دسمبر 2019

Share On Whatsapp