روس نے بھارت کو چونا لگا دیا

فروخت کیا گیا اربوں ڈالرز مالیت کا طیارہ بردار جہاز ناکارہ نکلا

نئی دہلی : : روس نے بھارت کو چونا لگا دیا۔اربوں ڈالرز مالیت کا فروخت کیا گیا، طیارہ بردار جہاز ناکارہ نکلا۔ تفصیلات کے مطابق بھارت روسی اسلحے کا ایک بہت بڑا خرید دار ہے۔ وہ امریکہ اور دوسرے ممالک سے بھی اسلحہ خریدتا ہے لیکن انکا زیادہ تر اسلحہ روسی ساختہ ہے۔ وہ دن بھارت کےلیے اچھے نہیں ہوتے جب روس کی جانب سے ہتھیاروں کی سپلائی میں دیر ہوجاتی ہے اور پھر اس میں ستم یہ کہ بہت سا اسلحہ چلنے کے قابل بھی نہیں ہوتا۔
انڈیا نے ایک نئے طیارہ بردار جہاز خریدنے کے لیے روس کے ساتھ معاہدہ کیا۔ اسکی ضرورت بھارت کو اس لیے پیش آئی کہ بھارت طیارہ بردار جہاز ’ویرات‘ 2007 میں ریٹائر ہو جانا تھا۔جب روس کو یہ پیش کش کی گئی توروس کے پاس طیارہ برادر جہاز تھاجو کہ ’باکو‘ کے نام سے جانا جاتا ہے۔ اسکو 1988 میں سویت روس نے استعمال کیا تھا۔ اسکے بعد ایک حادثے میں اسکے بوائلر میں آگ بھڑک اٹھی جسکے بعد اسکو استعمال میں نہیں لایا جا سکا تھا۔
اسکی حالت بہت زیادہ خستہ ہو چکی تھی اور ناقابل استعمال تھی۔ روس چاہتا تو یہ طیارہ برادر جہاز ہندوستان کو فری دے سکتا تھا لیکن بھارت نے اسکے لیے روس کو 974 ارب ادا کیےجو کہ اسکی درستی کے عمل میں استعمال ہونے تھے۔ روس کو یہ طیارہ بردار جہاز 2007 میں بھارت کو دینا تھا لیکن اس سے کچھ عرصہ پہلے روس نے یہ دعویٰ کر دیا کہ اسکو درست طریقے سے استعمال کرنے کے لیے جو لاگت آئیگی وہ ادا شدہ رقم سے دگنی ہے جسکے بعد یہ پروجیٹ تاخیر کا شکار ہو گیا اور بھارت کو ایک ناکارہ جہازبیچ دیا گیا جس پر اربوں کی لاگت آئی ہے۔
بھارت طیارہ بردار جہاز دوسرے ممالک مثلاً اٹلی، امریکہ یا فرانس سے بھی خرید سکتا تھا لیکن اسکے پاس اتنی رقم موجود نہیں تھی۔ اب بھارت کے پاس ایک ایسا ناکارہ جہاز موجود ہے جسکو کہیں بھی استعمال نہیں کیا جا سکتا۔

تاریخ اشاعت : ہفتہ 14 دسمبر 2019

Share On Whatsapp