نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کائونٹ نہ بڑھنے کی وجہ سے صحت کو بدستور خطرات لا حق ،علاج کیلئے بیرون ملک منتقل کرنیکا حتمی فیصلہ

, ای سی ایل سے نام نکلتے ہی فوری روانگی کا امکان ہے ،لندن میں علاج معالجے کے حوالے سے انتظامات مکمل کر لئے گئے ‘ ذرائع , میڈیکل بورڈ اور ذاتی معالج کی شہباز شریف اور مریم نواز سے تفصیلی مشاورت ،خاندان نے نواز شریف کو علاج کیلئے بیرون ملک جانے کیلئے قائل کر لیا

لاہور : سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف کا اپنی رہائشگاہ پر قائم انتہائی نگہداشت یونٹ میں علاج معالجہ جاری ہے تاہم پلیٹ لیٹس کائونٹ نہ بڑھنے کی وجہ سے صحت کو بدستور خطرات لا حق ہیں ،شریف خاندان نے نواز شریف کوعلاج کے لئے بیرون ملک منتقل کرنے کا حتمی فیصلہ کر لیا اورای سی ایل سے نام نکلتے ہی فوری روانگی کا امکان ہے ،لندن میں علاج معالجے کے حوالے سے انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں ۔
ذرائع کے مطابق شریف میڈیکل کمپلیکس کے ڈاکٹروں پر مشتمل بورڈ اور ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے گزشتہ روز بھی جاتی امراء میں نواز شریف کا تفصیلی طبی معائنہ کیا اور پلیٹ لیٹس کائونٹ نہ بڑھنے پر تشویش کا اظہار کیا گیا ۔ ذرائع کے مطابق میڈیکل بورڈ اورڈاکٹر عدنان کی شہباز شریف اور مریم نواز سے تفصیلی مشاورت ہوئی جس کے بعد شریف خاندان نے نواز شریف کو علاج کے لئے بیرون ملک جانے کے لئے قائل کر لیا ہے ۔
ذرائع کے مطابق شہباز شریف ،جنید صفدر اورذاتی معالج ڈاکٹرعدنان نواز شریف کے ہمراہ لندن جائیں گے جبکہ لندن میں نوازشریف کے علاج معالجے کے حوالے سے انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں ۔ ذرائع کے مطابق شہباز شریف کی جانب سے نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کیلئے باضابطہ درخواست دیدی گئی ہے جس میں نواز شریف کی صحت کا حوالہ دیا گیا ہے ،نام ای سی ایل سے نکلنے اور ضابطے کی کارروائی مکمل ہوتے ہی نواز شریف کی فوری لندن روانگی کا امکان ہے ۔
ذرائع کے مطابق لندن کے ہارلے سٹریٹ کلینک میں ڈاکٹرز کا پینل تشکیل دیدیا گیا ہے اور نواز شریف کا لندن پہنچتے ہی علاج شروع کر دیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم کے صاحبزادے حسن نواز نے لندن میں ڈاکٹرز سے ملاقات کر کے اپنے والد کی تازہ ترین میڈیکل رپورٹس سے انہیںآگاہ کیا ہے ، اس کے علاوہ دل اور گردوں کے ماہرین سے ابتدائی مشاورت مکمل کر لی گئی ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 8 نومبر 2019

Share On Whatsapp