پاکستان کی سعودی عرب اور ایران کو کشیدگی میں کمی کے لیے سہولت کاری کی پیشکش

ایران کے ساتھ مضبوط تعلقات پاکستان کی ہمیشہ ترجیح رہی، تمام فریقین تعمیری بات چیت کا راستہ اختیارکریں، موجودہ صورتحال میں فوجی ٹکراؤ سے بچنے ضرورت ہے۔وزیراعظم عمران خان کا ایرانی قیادت پرزور

اسلام آباد : پاکستان نے سعودی عرب اورایران میں کشیدگی میں کمی کیلئے سہولتکاری کے کردارادا پیشکش کردی، وزیراعظم عمران خان نے ایرانی قیادت پر زور دیا کہ تمام فریقین تعمیری بات چیت کا راستہ اختیارکریں، موجودہ صورتحال میں فوجی ٹکراؤ سے بچنے ضرورت ہے،ایران کے ساتھ مضبوط تعلقات پاکستان کی ہمیشہ ترجیح رہی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزارت خارجہ نے اعلامیہ نے جاری کیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے تہران کا ایک روزہ دورہ کیا۔
وزیراعظم کا دورہ تہران خلیج میں امن وسلامتی کے فروغ کیلئے اقدامات کا حصہ ہے۔ دورے میں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی سمیت اعلیٰ سطح وفد بھی وزیراعظم کے ہمراہ تھا۔ اعلامیہ میں کہا گیا کہ وزیراعظم نے صدر روحانی کے ساتھ ملاقات میں دو طرفہ تاریخی، ثقافتی  تعلقات کو اجاگر کیا۔ وزیراعظم نے مسئلہ کشمیر پر ایران کی حمایت پر شکریہ ادا کیا۔
خلیج کی موجودہ صورتحال میں فوجی ٹکراؤ سے بچنے ضرورت ہے۔ دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی و اقتصادی تعلقات کومزید مستحکم کیا جائےگا۔ ایران کے ساتھ مضبوط تعلقات پاکستان کی ہمیشہ ترجیح رہی۔ عمران خان نے کہا کہ پاکستان کشیدگی میں کمی کیلئے سہولتکاری کا کردارادا کرنے کیلئے تیارہے۔ اعلامیہ میں بتایا گیا کہ تمام فریقین تعمیری بات چیت کا راستہ اختیار کریں۔
وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں 68 روز سے لاک ڈاؤن ہے۔ بھارت کے5 اگست کے غیرقانونی اقدامات سے خطے کے امن وسلامتی کوشدید خطرات لا حق ہیں۔ دوسری جانب ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کے مطابق ایران میں ملاقاتوں کے دوران وزیراعظم امن و سلامتی اور باہمی دلچسپی کے امور پر بھی تبادلہ خیال کریں گے۔ یہ عمران خان ایران کا دوسرا دورہ ہے۔
اس سے قبل وزیراعظم عمران خان رواں سال اپریل میں بھی ہمسائے ملک کا دورہ کر چکے ہیں۔دوسری طرف وزیراعظم کل منگل کو سعودی عرب بھی جائیں گے۔ عمران خان کا ایک روزہ دورہ سعودی عرب ہو گا، وزیراعظم سعودی ولی عہد محمد بن سلمان سے ملاقات کریں گے۔ یاد رہے کہ نیو یارک میں یو این جنرل اسمبلی کے دوران وزیراعظم کے خطاب سے قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے عمران خان سے ملاقات کی تھی، اور ان سے کہا تھا کہ ایران اور سعودی عرب کی کشیدگی کو کم کرنے اور معاملات کو سلجھائیں۔
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا اس وقت کہنا تھا کہ ایران کے معاملے پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پاکستان سے ساتھ مدد مانگتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد ایران، سعودی عرب معاملات کو سلجھائے اور بڑھتی ہوئی کشیدگی کم کرے۔ ایران کی صورتحال پر وزیراعظم کی پالیسی واضح ہے۔

تاریخ اشاعت : اتوار 13 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp