Mickey Arther Failed To Get Bangladesh Head Coach Job

قومی ٹیم کے سابق کوچ مکی آرتھر کو نئی ملازمت میں مشکلات کا سامنا

بنگلہ دیشی ٹیم کو2سال کیلئے ڈومینگو کی خدمات حاصل،سابق پاکستانی کوچ ہاتھ ملتے رہ گئے

لاہور : پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق ہیڈ کوچ مکی آرتھر کو نئی ملازمت کے سلسلے میں مشکلات کا سامنا ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے فارغ ہونے کے بعد مکی آرتھر نے بنگلادیش کرکٹ ٹیم کی کوچنگ کیلئے درخواست دی تھی لیکن جنوبی افریقا کرکٹ ٹیم کے سابق کوچ رسل ڈومینگو کو بنگلادیش کرکٹ ٹیم کا نیا ہیڈ کوچ مقرر کیا گیا ہے جنہیں نیوزی لینڈ کے سابق ہیڈ کوچ مائیک ہیسن اور پاکستان کے سابق کوچ مکی آرتھر پر ترجیح دی گئی۔
ان کا بنگلادیش بورڈ سے 2 سال کا معاہدہ ہوا ہے اور رواں ماہ ہی ڈھاکا میں ٹیم کو جوائن کریں گے، بی سی بی کے صدر نظم الحسن نے کہاکہ ک±ل وقتی دستیابی اور طویل مدت پلاننگ کی وجہ سے ڈومینگو کو ترجیح دی گئی،وہ جونیئر اور اے ٹیموں کو ساتھ گروم کرتے ہوئے مستقبل کیلیے کھلاڑیوں کی کھیپ تیار کرنا چاہتے ہیں، ہوم گراو¿نڈز پر بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی بنگلادیش ٹیم بیرون ملک ناکامیوں سے دوچار ہوتی ہے، ان مسائل کے پیش نظر کسی ایسے کوچ کی ضرورت تھی جو وہاں کی کنڈیشنز اور ٹیم کی ضروریات کو سمجھتا ہو۔
ڈومینگو 2013ءسے2017ءتک جنوبی افریقا کے ہیڈ کوچ رہ چکے ہیں۔ورلڈ کپ کی خراب کارکردگی کے بعد بنگلادیش نے سٹیو روہوڈز کو برطرف کردیا تھا، ورلڈ کپ میں بنگلادیش نے آٹھویں پوزیشن حاصل کی تھی۔یاد رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے بھی ہیڈ کوچ مکی آرتھر سمیت قومی کرکٹ ٹیم کے کوچنگ سٹاف کے معاہدوں میں توسیع نہ کرنے کا فیصلہ کیا تھا جس کے بعد وہ پاکستان سے واپس وطن لوٹ گئے تھے۔

تاریخ اشاعت : اتوار 18 اگست 2019

Share On Whatsapp