پاکستان کی جانب سے بھارتی فلموں پر پابندی عائد ہونے کے بعد بھارتی اداکارہ پریشان

بطور فنکار ہر کوئی چاہتا ہے کہ اسے ہر جگہ دیکھا جائے ایسے یہ پابندی پریشانی کا باعث ہے: سونم کپور

نئی دہلی : پاکستان کی جانب سے بھارتی فلموں پر پابندی عائد ہونے کے بعد بھارتی اداکارہ نے پریشانی کا اظہار کیا ہے۔ بھارتی بالی وڈ سٹارسونم کپور نے کہا ہے کہ بطور فنکار ہر کوئی چاہتا ہے کہ اسے ہر جگہ دیکھا جائے ایسے میں یہ پابندی پریشانی کا باعث ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ حالات جس نہج پر جا پہنچے ہیں وہ پریشان کن ہے لیکن وہ ایک محبِ وطن ہیں اس لیے وہ خاموش رہنا پسند کریں گی تاہم پاکستان کی جانب سے بھارتی فلموں پر پابندی نے انہیں پریشان کیا ہے۔
واضح رہے کہ سونم کپور کو پاکستان میں بہت پسند کیا جاتا ہے اور وہ پاکستانی اداکار فواد خان کے ساتھ ایک فلم میں بطورِ ہیرؤن کام کر چکی ہیں لیکن اب وہ پریشان ہیں کیونکہ ان کی فلمیں پاکستان میں نہیں دیکھی جا سکیں گی۔ سونم کپور کی ایک فلم ’ایک لڑکی کو دیکھا تو ایسا لگا‘ حال ہی میں لیز ہوئی ہے جو کہ پاکستان میں نہیں دیکھائی گئی جبکہ ان کی ایک اور فلم ’زویا فیکٹر‘ بھی رلیز ہو رہی ہے جو کہ پاکستان میں نہیں دیکھائی جا سکے گی۔
خیال رہے کہ پاکستان میں عوام کی بڑی تعداد انڈین فلمیں دیکھنے کوترجیح دیتی ہے اس کی ایک بڑی وجہ یہ ہے کہ پاکستانی فلم انڈسٹری اس قدر زبوں حالی کاشکار ہے کہ یہاں اچھے موضوع پر معیاری فلمیں بنتی ہی نہیں ہیں۔ لہٰذا عوام کے پاس آخری آپشن انڈین فلمیں دیکھنا ہی بنتا تھا۔تاہم ان دنوں ایک تو پاکستانی فلمیں بہت اچھی بننے لگی ہیں اور ہر آنے والی فلم ایک سے بڑھ کر ایک ہوتی ہے اور دوسری طرف کشمیر کے ایشو کی وجہ سے بھی بھارتی فلمیں دکھنا اخلاقایات کے منافی ہے۔
اس لیے پاکستان میں نہ صرف عید کے موقعہ پر بلکہ ویسے بھی انڈین فلمیں دیکھنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ وزیراعظم کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے اپنی ایک ٹوئٹ میں کہا ہے کہ ملک میں کسی سینما گھر میں بھارتی فلمیں نہیں دکھائی جائیںگی، بھارتی ڈرامے، فلمیں اور اس طرح کا مواد پاکستان میں نشر کرنے پر پابندی ہوگی۔ پاکستان کے کسی سینما میں بھارتی فلموں کی نمائش نہیں ہوگی۔

تاریخ اشاعت : ہفتہ 17 اگست 2019

Share On Whatsapp