10 Historical Events That Sound Like Fiction But Are Actually Real

10تاریخی واقعات جو افسانہ لگتے ہیں لیکن حقیقت ہیں

ہم جس دنیا میں رہتے ہیں، یہ بہت حیرت انگیز جگہ ہے۔ دنیا کی تاریخ بہت سے  حیرت انگیز  واقعات سے بھری پڑی ہے۔ ذیل میں ہم آپ کو چند ایسے واقعات کے بارے میں بتا رہے ہیں، جو بظاہر افسانہ معلوم ہوتے ہیں لیکن یہ حقیقت ہیں۔

1.    1325ء میں اٹلی میں واقع  دو مخالف  شہروں مودینا اور بولونیا کے درمیان  ایک احمقانہ جنگ لڑی گئی ۔ یہ جنگ ایک لکڑی کے ڈول کی وجہ سے  لڑی گئی تھی، جسے مودینا کے سپاہیوں نے بولونیا کے  کنویں سے چرایا تھا۔

یہ ڈول آج بھی مودنیا میں موجود ہے۔
2.    1858ء میں لندن میں ایک عجیب و غریب واقعہ پیش آیا۔ گرم موسم کے باعث دریائے ٹیمز کے کنارے جمع انسانی  اور صنعتی فضلے سے انتہائی ناگوار بدبو اٹھنے لگی، جس سے بیماریاں  بھی پھیل گئی اور لوگوں کو اپنے روز مرہ کام میں دشواری کا سامنا کرنا پڑا۔
3.    1859ء میں آسٹریلیا منتقل ہونے والے ایک برطانوی شخص  نے  اپنی زمینوں پر صرف 24 خرگوش چھوڑے تھے۔
مناسب موسم اور شکاری جانوروں کے نا ہونے کی وجہ سے خرگوشوں نے اپنی تعداد میں بے تحاشا اضافہ کیا۔ 1920 میں یعنی تقریباً 60 سال میں آسٹریلیا میں خرگوشوں کی تعداد 10 ارب تک پہنچ گئی۔ حکومت نے  ان سے چھٹکارا پانے کے لیے اربوں روپے خرچ کر دئیے لیکن آج بھی آسٹریلیا سے خرگوشوں کا مکمل طور پر خاتمہ نہیں ہوسکا۔
4.    1871ء کے ایک دن  روچیسٹر، نیویارک سے کینیڈا کو  دیکھا جا سکتا تھا۔
دونوں جگہوں کے بیچ تقریباً تین ہزار کلومیٹر کا فاصلہ ہے۔ اس مظہر کو روچیسٹر سراب کا نام دیا گیا ہے۔
5.    1914ء میں کرسمس کے دوران جرمنی اور برطانیہ کے بیچ عارضی  جنگ بندی کا معاہدہ ہوا۔ عارضی جنگ بندی کے دوران دونوں اطراف کے فوجیوں نے اپنے مورچوں کو رنگوں سے سجایا، نومینز لینڈ پر ایک دوسرے سے تحائف کا تبادلہ کیا۔اس دوران سپاہیوں کے بیچ میں فٹ بال میچ بھی ہوا۔
اسے کرسمس ٹروس یا کرسمس عارضی  جنگ بندی کا نام دیا گیا تھا۔
6.    جنوبی افریقا میں ایک بابون  (لنگور) کو  ریلوے سگنل بدلنے کی تربیت دے کر باقاعدہ ملازمت پر رکھ لیا گیا۔ جیک نامی اس بابون کو ہر روز 20 سینٹ اور ہفتے میں بیئر کی آدھی بوتل ملتی تھی۔ یہ بابون  اصل میں ایک معذور سگنل مین جیمز وائیڈ کے  پالتو اسسٹنٹ کے طور پر کام کرتا تھا۔
9 سال کے عرصے میں جیک نے کبھی کوئی غلطی نہیں کی۔
7.    1618ء سے 1648ء تک لڑی جانے والی مذہبی تیس سالہ جنگ کے دوران ایک جنرل نے جرمنی کے ایک ٹاؤن پر قبضہ کر لیا۔ قبضے کے وقت ٹاؤن کے رہائشیوں نےخوش آمدید کہتے ہوئے  3.5 لٹر بہترین شراب کا گھڑا جنرل کو پیش کیا۔ جنرل نے ٹاؤن کے رہائشیوں کو چیلنج دیا کہ اگر کوئی ایک ہی بار میں 3.5 لٹر شراب سے بھرے اس گھڑے کو پی جائے تو وہ ٹاؤن چھوڑ کر چلا جائے گا۔
ٹاؤن کے میئر نے چیلنج قبول کیا  اور دس منٹ میں ساری شراب پی کر جنرل کو حیران کر دیا۔ جنرل نے اپنے الفاظ کا پاس رکھا اور اپنی فوج کے ساتھ ٹاؤن سے چلا گیا۔
8.    13 مارچ 1989 کو شمسی طوفان کے باعث کینیڈا کے صوبے کیوبک میں بجلی بند ہوگئی اور پورے صوبے میں بلیک آؤٹ ہوگیا۔
9.    برطانیہ کے شاہ ایڈورڈ اول نے اپنے وقت تک کی سب سے بڑی منجنیق بنائی تھی، جسے ور وولف (Warwolf) کا نام دیا۔
اس منجنیق کو دیکھتے ہی سکاٹس نے   ہتھیار ڈال  دئیے لیکن شاہ نے اپنی منجنیق کو آزمانے کا فیصلہ کیا اور 140 کلوگرام وزنی پتھروں کی برسات کر کے سکاٹس کے قلعے کی دیواریں توڑ دیں۔
10.    1904ء کے  اولمپکس کو بدترین اولمپکس قرار دیا جاتا ہے۔ سینٹ لوئس ، مسوری میں ہونے والے  ان اولمپکس میں میراتھن کے فاتح قرار دئیے جانے والے  فریڈرک لورز نے میراتھن کے درمیان ہی دوڑ چھوڑ دی تھی۔ وہ کار پر  واپس جا رہے تھے کہ جیتنے کی  لائن کے قریب  پہنچ کر کار سے اتر کر دوڑنے  لگے۔ انہیں فاتح سمجھ کر امریکی صدر روز ویلٹ کی بیٹی ایلس ویلٹ نے  ان کے ساتھ تصویر بنوائی تاہم بعد میں انتظامیہ نے انہیں  پہچان لیا۔ فریڈرک نے بھی اپنے دھوکے کو قبول کر کے اسے مذاق کا نام دیا۔

تاریخ اشاعت : منگل 30 جولائی 2019

Share On Whatsapp
سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں