آئی سی سی امپائر کے فیصلوں پر تبصرہ کرنے کا مجاز نہیں ہے

کرکٹ کے میدان پر موجود امپائر کو کھیل کے قوانین کی تشریح کرنے کا اختیار حاصل ہے۔ترجمان آئی سی سی

انگلینڈ : : انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے ورلڈ کپ 2019ء کے حوالے سے اپنی خاموشی توڑ دی ۔ تفصیلات کے مطابق آئی سی سی کے ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ کرکٹ کے میدان پر موجود امپائر کو کھیل کے قوانین کی تشریح کرنے کا اختیار حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ پالیسی کے تحت آئی سی سی امپائر کے فیصلوں پر کسی بھی قسم کا کوئی تبصرہ کرنے کا مجاز نہیں ہے۔
خیال رہے کہ عالمی کپ 2019ء کے فائنل میچ میں ہونے والی اوور تھرو معمہ بن گئی تھی جس کی وجہ سے دنیائے کرکٹ میں نیا تنازع کھڑا ہوگیا تھا اور کرکٹ شائقین سمیت کئی افراد نے اس پر بحث شروع کر دی تھی ، اسی بحث کے پیش نظر آئی سی سی کو اپنی خاموشی توڑنا پڑی۔ یاد رہے کہ انگلینڈ نے ورلڈ کپ 2019ء کے فائنل میں نیوزی لینڈ کو شکست دے کر پہلی مرتبہ ٹائٹل اپنے نام کیا تھا۔
انگلینڈ کو آخری اوور میں جیت کے لیے 15 رنز درکار تھے، بین سٹوکس نے شاندار بیٹنگ کرتے ہوئے چھکا لگایا اور اگلی ہی گیند پر 2 رنز بنائے تاہم فیلڈر نے تھرو کیا اور گیند باﺅنڈری پار کر گئی جس سے انگلینڈ کو 4 اضافی رنز مل گئے۔ میزبان ٹیم کو آخری گیند پر جیت کے لیے 2 رنز درکار تھے لیکن دوسرا رن بناتے ہوئے ووڈ رن آﺅٹ ہوگئے اور یوں میچ برابر ہوگیا تھا۔
ونر کے لیے سپر اوور دیا گیا تو انگلینڈ نے بغیر کسی نقصان کے 15 رنز بنائے جس کے جواب میں نیوزی لینڈ نے بھی 15 رنز بنائے تاہم زیادہ باﺅنڈریز کی وجہ سے انگلینڈ کو فاتح قراردیا گیا۔ میچ وننگ اننگز کھیلے پر بین سٹوکس فائنل کے بہترین کھلاڑی قرار پائے تھے۔ دوسری جانب دو روز قبل انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے ورلڈ کپ 2019ء کے اختتام کے بعد ورلڈ کپ ٹیم کا اعلان بھی کیا تھا۔
جس میں ایک بھی پاکستانی کھلاڑی کو شامل نہیں کیا گیا ۔ آئی سی سی نے ''ورلڈکپ ٹیم''کی قیادت کین ولیم سن کے سپرد کی جبکہ دیگر کھلاڑیوں میں انگلینڈ کے جیسن روئے، انگلینڈ کے جو روٹ،بھارت کے روہت شرما، بنگلہ دیش کے شکیب الحسن، انگلینڈ کے بین سٹوکس، آسٹریلیا ہی کے مچل سٹارک، انگلینڈ کے جوفرا آرچر، آسٹریلیا کے ایلکس کیری اور نیوزی لینڈ کے لوکی فرگوسن شامل ہیں۔

تاریخ اشاعت : بدھ 17 جولائی 2019

Share On Whatsapp