جاپانی شرح پیدائش میں مسلسل کمی،2018 ء کے دوران صرف 918387 بچوں کی پیدائش ہوئی، سروے رپورٹ

ٹوکیو : جاپان میں شرح پیدائش میں مسلسل کمی آرہی ہے گزشتہ سال کے دوران صرف 918387 بچوں کی پیدائش ہوئی۔حکومت کی جانب سے کرائے گئے حالیہ سروے کے مطابق ملک کی مجموعی شرح پیدائش کم ہوکر 0.01 فیصد رہ گئی ہے جو گزشتہ سال 1.42 فیصد تھی، اس کے باعث ملک کی آبادی میں نمایاں کمی آرہی ہے۔ وزیر اعظم شینزو ایبے کی حکومت نے موثرآبادی کے لئے ایک جامع منصوبہ تیار کیا ہے جس کے تحت سال 2026 ء تک شرح پیدائش 1.8 فیصد تک لے جانے کے لئے خاندانوں کی حوصلہ افزائی کی جائے گی۔
وزارت صحت کے حکام نے کہا ہے کہ ہم شرح پیدائش میں اضافے کے لئے پالیسیاں مرتب کریں گے اور مائوں کو بچوں کی پرورش اور کفالت میں مدد دیں گے، ترقی یافتہ ملک ہونے کے باوجود جاپانی شہری کم بچوں کو ترجیح دیتے ہیں۔ جاپان میں آبادی میں اضا فے کے ایک حامی گروپ کے سروے کے مطابق 3000 خاندانوں میں سے 73.5 فیصد لوگوں نے اپنے لئے دوسرے بچے کی پیدائش سے انکارکیا جبکہ شادی بیاہ میں بھی کمی آئی ہے۔ گزشتہ سال پورے جاپان میں صرف 20428 جوڑوں نے شادی کی ۔

تاریخ اشاعت : پیر 10 جون 2019

Share On Whatsapp