لاہور،منی لانڈرنگ کیس میں شریف خاندان کی خواتین کے طلبی کے نوٹس منسوخ

نیب کی کسی سیاسی پارٹی سے نہیں صرف پاکستان سے وابستگی ہے،چیئرمین نیب

لاہور۔15 اپریل : قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس(ر) جاوید اقبال نے پیر کے روز نیب لاہور بیورو کا دورہ کیا جہاں ڈی جی نیب لاہور کی جانب سے انہیں میگا کرپشن مقدمات بالخصوص شریف فیملی سے متعلقہ کیسز جن میں آمدن سے زائد اثاثہ جات اورمبینہ منی لانڈرنگ کے کیس شامل ہیں پر جامع بریفنگ دی گئی۔چیئرمین نیب کی جانب سے فیصلہ کیا گیا کہ شریف فیملی کے تمام کیسز کی براہ راست نگرانی وہ خود کریں گے تاہم جسٹس(ر) جاوید اقبال نے شہبار شریف کی اہلیہ نصرت شہباز، صاحبزادیوں رابعہ عمران اور جویریہ علی کو نیب لاہور کی جانب سے بھجوائے گئے طلبی کے نوٹسز کینسل کرنے اور انہیں متعلقہ کیس بارے نیب کو مطلوب معلومات کیلئے سوالنامہ ارسال کرنے کے احکامات صادر کئے۔
نیب کی جانب سے شریف فیملی کی خواتین کو آمدن سے زائد اثاثہ جات اور مبینہ منی لانڈرنگ کیس میں سوالنامے ارسال کر دیئے جائیں گے ۔ مذکورہ اقدامات اس بات کی غماز کرتے ہیں کہ نیب خواتین کے تقدس ،حرمت، عزت ، چادر اور چار دیواری پر مکمل یقین رکھتا ہے۔ اس موقع پر چیئرمین نیب کا کہنا تھا کہ ’’احتساب سب کیلئے‘‘کی پالیسی پر سختی سے گامزن ہے جبکہ نیب کی کسی سیاسی پارٹی سے وابستگی نہیں۔
نیب ایک خود مختار ادارہ ہے اور کسی بھی دبائو کو بالائے طاق رکھتے ہوئے قانون اور آئین پاکستان کو مدنظر رکھتے ہوئے اپنے اقدامات سرانجام دیتا ہے،نیب کی نظر میں تمام ملزمان برابر ہیں تاہم میگا کرپشن مقدمات کو میرٹ اور صرف میرٹ کی بنیاد پر جلد از جلد منطقی انجام تک پہنچایا جائیگا۔انہوں نے اس بات کا اعادہ کیا کہ نیب کی وابستگی صرف اور صرف ریاست پاکستان سے ہے۔

تاریخ اشاعت : پیر 15 اپریل 2019

Share On Whatsapp