حکومت چیف الیکشن کمشنر کے لیے بابر یعقوب فتح محمد کا نام واپس لینے پر آمادہ ہوگئی

الیکشن کمشنر اور دو ارکان کی تعیناتی کا معاملہ تعطل کا شکار رہا ہے

اسلام آباد : نئے چیف الیکشن کمشنر کی تعیناتی کے معاملے پر پاکستان تحریک انصاف کی حکومت اپنے امیدوار بابر یعقوب فتح محمد کا نام واپس لینے پر آمادہ ہوگئی ہے. چیف الیکشن کمشنر کی تعیناتی کے حوالے سے گزشتہ تمام اجلاسوں میں حکومت بابر یعقوب کے نام پر اصرار کرتی رہی ہے، جس کی وجہ سے الیکشن کمشنر اور دو ارکان کی تعیناتی کا معاملہ تعطل کا شکار رہا ہے ذرائع کے مطابق حزب اختلاف کی جانب سے حکومتی نامزد امیدوار فضل عباس میکن کے نام کو موزوں قرار دیا گیا ہے.
ذرائع کے مطابق وزیر اعظم عمران خان سے مشاورت کے بعد حکومتی ٹیم نے بابر یعقوب کا نام واپس لینے پر رضامندی ظاہر کردی ہے خیال رہے کہ بابر یعقوب سیکرٹری الیکشن کمیشن کی حیثیت سے فرائض سرانجام دے چکے ہیں دریں اثناءپاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما راجہ پرویز اشرف نے کہا کہ الیکشن کمیشن کے دو ارکان کی تقرری پر اتفاق ہو چکا ہے تاہم انہوں نے کہا کہ چیف الیکشن کمشنر کے نام پر اتفاق ہونا باقی ہے.
واضح رہے کہ وزیر خارجہ شاہ محمود نے کہا تھا کہ حکومت الیکشن کمشنر اور ممبران کی تعیناتی کا معاملہ پارلیمنٹ میں افہام و تفہیم سے حل کرنا چاہتی ہے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے اسلام آباد میں ملاقات کے دوران چیف الیکشن کمشنر اور الیکشن کمیشن کے ممبران کی تعیناتی پر ہونے والی پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا. وزیر خارجہ نے اسپیکر کو اپوزیشن سے ہونے والی ملاقات کی تفصیلات سے آگاہ کیا تھا دونوں راہنماﺅں نے الیکشن کمیشن کے ممبران اور چیف الیکشن کمشنر کے معاملے کو افہام و تفہیم سے حل کرنے پر اتفاق کیا تھا ملاقات میں معاملے کو حل کرنے کے لئے تمام سیاسی جماعتوں سے مشاورت جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا تھا.اسپیکر قومی اسمبلی نے اس موقع پر کہا تھا کہ پارلیمان کی بالادستی کو قائم رکھنے کے لیے الیکشن کمیشن کے معاملے کو پارلیمانی سطح پر حل کرنا ضروری ہے‘انہوں نے کہا تھاکہ اپوزیشن اور حکومت میں اس معاملے پر اتقاق رائے پیدا کرنے کے لیے اپنا کردار جاری رکھوں گا اس معاملے کو حل کرنے کے لئے تمام سیاسی جماعتوں کو وسیع القلبی کا مظاہرہ کرنا ہوگا.

تاریخ اشاعت : منگل 14 جنوری 2020

Share On Whatsapp