وزیراعلیٰ پنجاب نے انٹرنیشنل کانفرنس برائے ڈینگی2020ء کا افتتاح کر دیا

مرض کے خاتمے کی لیے ہماری جدوجہد جاری،عوام کو صحت کی معیاری سہولتیں فراہم کرنے کے لیے پرعزم ہیں، کانفرنس ڈینگی کے تدارک کیلئے گیم چینجر ثابت ہوگی، وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار کا انٹرنیشنل کانفرنس برائے ڈینگی سے خطاب

لاہور : وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدارنے محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئرپنجاب کے زیراہتمام انٹرنیشنل کانفرنس برائے ڈینگی2020ء کا افتتاح کردیا، کانفرنس میں صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد، مشیر صحت حنیف پتافی، سیکرٹری پرائمری و سیکنڈری ہیلتھ کیئر کیپٹن (ر) محمد عثمان، غیرملکی ماہرین،محققین،محکمہ صحت کے حکام، سیکرٹریز،میڈیکل کالجز کے وائس چانسلرز، ڈاکٹرز اور سائنسدانوں نے شرکت کی۔
وزیراعلیٰ سردارعثمان بزدار نے کانفرنس کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہو ئے کہا کہ ڈینگی مچھر سے پاکستان ہی نہیں بلکہ بہت سے ممالک متاثر ہو چکے ہیں،ڈینگی کے خاتمے اور اس سے بچاؤ کیلئے ہماری جدوجہد جاری ہے،ڈینگی سی33 قیمتی جانوں کا نقصان بے حد صدمے اور دکھ کا باعث ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ میں نے خود گزشتہ برس ڈینگی کی وباء پر کنٹرول کیلئے مختلف شہروں کے دورے کئے،ہسپتالوں میں جا کر ذاتی طور پر صورتحال کا جائزہ لیا،حکومت پنجاب نے ڈینگی کے مریض سامنے آنے پر فوری اقدامات شروع کئے۔
انہوں نے کہا کہ ڈینگی کو کنٹرول کرنے کیلئے تمام تر وسائل کو بروئے کار لایا گیا جس سے عوامی نمائندوں، محکمہ صحت اور انتظامیہ کے اقدامات کے مثبت نتائج سامنے آئے۔ انہوں نے کہا کہ ڈینگی کی روک تھام کیلئے ارکان اسمبلی اور سیاسی شخصیات کی خدمات ہر طرح قابل تحسین ہیں،ڈینگی کیخلاف مہم میں سول سوسائٹی کا کردار بھی قابل تحسین ہے۔ وزیر اعلی نے کہا کہ عوام کی صحت کا تحفظ بھی فلاحی حکومت کی بنیادی ذمہ داری ہے،عوام کو صحت کی معیاری سہولتیں بہم پہنچانے کیلئے ہر طرح یکسو اور پرعزم ہیں۔
انہوں نے کہا کہ شہریوں کو صحت مند ماحول اور صاف ستھری فضاء فراہم کرنا پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کا وژن ہے،ڈینگی اور اس جیسی ہلاکت خیز بیماریوں سے بچاؤ اور انکا پیشگی سدباب حکومت پنجاب کی ترجیحات میں سرفہرست ہے۔انہوں نے کہا کہ ڈینگی کے منفی اثرات کو کم از کم کی حد تک لانا چاہتے ہیں،2011ء میں پنجاب میں ڈینگی کی بدترین وباء پھیلی جس سی20 ہزار سے زائد ڈینگی کے کیس سامنے آئے اور 350 کے قریب افراد جاں بحق ہوئے،2019ء میں پنجاب کو ایک بار پھر ڈینگی کی وباء کا سامنا ہوا،راولپنڈی سب سے زیادہ متاثرہ شہر تھا،مجھے 2019ء میں ڈینگی کے باعث قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر بہت دکھ ہوا،ہم نے مربوط انداز میں ڈینگی کیخلاف مہم چلائی جس میں کامیابی ملی،میرے ساتھ صوبائی وزیر صحت اور سیکرٹری پرائمری و سیکنڈری ہیلتھ کیئر نے بھی ڈینگی کے خلاف مہم میں بھرپور حصہ لیا۔
انہوں نے کہا کہ سیاسی نمائندوں نے بھی دن رات ایک کرکے ڈینگی پر قابو پایا، سیاسی قیادت کی ذمہ داری ہے کہ وہ شہریوں کی ہیلتھ اور سیفٹی کیلئے اخلاقی، مالی اور انتظامی سپورٹ فراہم کرے اورمتعلقہ محکموں کا فرض ہے کہ وہ موثر اور جانفشانی سے وضع کر دہ پلا ن پر عملدرآمد یقینی بنائیں۔ وزیر اعلی عثمان بزدار نے کہا کہ ہم ڈینگی کے خلاف فائر فائٹنگ یا وقتی اقدامات کرنے کی بجائے مستقل پلاننگ کر رہے ہیں،ہمارا مشن ہے کہ نئے پاکستان میں سب شہریوں کو صحت مند ماحول فراہم کیا جائے،اس کانفرنس کا مقصد بھی یہی ہے کہ ڈینگی سے نمٹنے کیلئے تسلسل کے ساتھ اقدامات کو جاری رکھا جائے۔
انہوں نے کہا کہ متحرک اور فعال پالیسی کے ذریعے ڈینگی سے نمٹنے کیلئے ہماری کاوشیں ضرور رنگ لائیں گی،مجھے یقین ہے کہ یہ بین الاقوامی کانفرنس ڈینگی کے تدارک کیلئے ایک گیم چینجر ثابت ہوگی، ہم رواں برس ڈینگی کے تدارک کیلئے مزید موثر اقدامات اٹھائیں گے،انٹرنیشنل ڈینگی کانفرنس میں سیرحاصل گفتگو اور مباحثے ضرور ثمرآور ثابت ہوں گے۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 9 جنوری 2020

Share On Whatsapp