آرمی چیف کی وہ بات جس پر ایرانی صدر احترام میں کھڑے ہو گئے

سینئیر صحافی نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور ایرانی صدر حسن ورحانی کی ملاقات سے دلچسپ واقعہ بتا دیا


Warning: call_user_func_array() expects parameter 1 to be a valid callback, function 'show_embed_live_video' not found or invalid function name in /home/urduquick/public_html/functions.php on line 87
اسلام آباد : سینئیر صحافی نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور ایرانی صدر حسن ورحانی کی ملاقات سے دلچسپ واقعہ بتا دیا۔تفصیلات کے مطابق سینئیر صحافی ہارون الرشید کا کہنا ہے کہ ہمیں سعودی عرب کا ساتھ دینا ہے لیکن ایران سے نہیں بگاڑنی،کیونکہ پڑوسی ملک نہیں بدلے جا سکتے۔جب جنرل باجوہ گئے تو ایرانیوں کا رویہ بہت اچھا تھا۔آرمی چیف جب ایرانی صدر حسن روحانی سے ملے تو انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ آپ کی صلح ہو جائے،عربوں کے ساتھ معاملات بہتر ہو جائیں۔
ایرانی صدر نے کہا کہ آپ یہ کیوں چاہتے ہیں؟ تو آرمی چیف نے جواب دیا کہ میں اس لیے چاہتا ہوں کیونکہ اللہ نے اس کا حکم دیا ہے،قرآن پاک میں لکھا ہے کہ مسلمانوں کی صلح کرو۔آرمی چییف کی یہ کہنے کی دیر تھی کہ ایرانی صدر جوش و جذبے کے ساتھ کھڑے ہو گئے۔ہارون الرشید نے مزید کہا کہ مجبویاں اور حالات جو بھی ہیں لیکن خواہش تو ہے صلح کی۔ ہارون الرشید نے مزید کیا کہا ویڈیو میں ملاحظہ کیجئے:۔
واضح رہے کہ گذشتہ ماہ چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے ایران کے صدر حسن روحانی سے ملاقات کی تھی۔ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق اس ملاقات میں علاقائی سلامتی کے ماحول اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔ ایرانی صدر مملکت نے علاقائی امن کے لئے پاکستان کے کردار اور دہشت گردی کے خلاف پاک فوج کی کامیابیوں کو بھی سراہا۔
خیال رہے کہ چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ ایران کے سرکاری دورے پر گئے تھے جہاں آج انہوں نے ایران کی سپریم نیشنل سکیورٹی کونسل کے سیکرٹری ایڈمرل علی شمس خانی اور ایرانی آرمی چیف میجر جنرل عبدالرحیم موسوی سے بھی الگ الگ ملاقاتیں کیں۔ڈائریکٹر جنرل آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کے ٹویٹ کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ایرانی قیادت سے ملاقاتوں میں علاقائی سلامتی کی صورتحال اور دوطرفہ دفاعی تعاون کے امور زیر غور آئے۔

تاریخ اشاعت : پیر 16 دسمبر 2019

Share On Whatsapp