Forest Department Reuses Plastic Bottles To Grow Plants

پولی تھین پر پابندی لگنے کے بعد محکمہ جنگلات نے پلاسٹک کی پرانی بوتلوں میں پودے اگاناشروع کر دئیے

بھارتی ریاست چھتیس گڑھ کے ایک ڈسٹرکٹ فارسٹ آفیسرنے شجرکاری کے لیے پلاسٹک کی پرانی بوتلوں کا استعمال شروع  کیا ہے۔ ڈسٹرکٹ فارسٹ آفیسر کے اس اقدام کا مقصد اس ماحول دوست طریقے سے خواتین کو روزگار فراہم کرنا ہے۔
اس منصوبے میں کام کرنے والی ایک خاتون امرلتا منج کا کہنا ہے کہ وہ شہروں سے پلاسٹک کی پرانی بوتلیں جمع کر کے نرسری میں لاتی ہیں۔
اس کے بعد بوتلوں کو کاٹا جاتا ہے۔ پھر اس میں زرخیز مٹی بھر کر پودے اگائے جاتے ہیں۔
پولی تھین کے بیگز پر پابندی لگنے کے  بعد محکمہ جنگلات نے پودے اگانے کے لیے بوتلوں کا استعمال شروع کیا ہے۔ ایک نرسری کے منیجر للن سنہا کا کہنا ہے کہ خواتین اپنے گھروں میں یا نرسری پر ہی بوتلیں کاٹتی ہیں اور پھر اس میں مٹی بھر کر پودے اگاتی ہیں۔
ڈسٹرکٹ فارسٹ آفیسر پرانے مشرا کا کہنا ہے کہ بوتلوں میں پودے اگانے سے علاقے کی خواتین کی آمدن میں بھی اضافہ ہوگا۔  انہوں نے تین ہزار پلاسٹک کی بوتلوں سے گملے بنائے ہیں۔ اُن کا کہنا ہے کہ ان پودوں کو فروخت کر کے اس سے حاصل ہونے والی رقم خواتین کو ہی دی جائے گی۔ اس پروگرام میں حصہ لینے والی خواتین کو یومیہ ادائیگی بھی کی جاتی ہے۔

تاریخ اشاعت : پیر 9 دسمبر 2019

Share On Whatsapp
سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں