لندن روانگی کے بعد نواز شریف کی ابتدائی طبی رپورٹ سامنے آگئی

سابق وزیراعظم اور قائد مسلم لیگ ن سینے کے غدود کی سوجن میں مبتلا ہیں، یہ بیماری انفیکشن ،ذہنی تناو اور کسی خاص قسم کی ہونے والی بیماری کی علامت ہے

لندن : لندن روانگی کے بعد نواز شریف کی ابتدائی طبی رپورٹ سامنے آگئی ہے ۔نوااز شریف سینے کے غدود کی سوجن میں مبتلا ہیں ۔ابتدائی طبی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سربراہ نواز شریف لمپ نوڈس کی سوجن میں مبتلا ہیں۔ تفصیلات کے مطابق یہ بیماری انفیکشن ،ذہنی تناو اور کسی خاص قسم کی ہونے والی بیماری کی علامت ہوتی ہے۔ سوجے ہوئے لمپ نوڈس ایک علامت ہیں ۔
دوسری طرف شہباز شریف اور شریف خاندان کے دیگر افراد کو ان اطلاعات سے آگاہ کر دیا گیا ہے۔شریف فیملی جلد ہی اس سلسلے میں میڈیا کو بریفنگ دینے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔ دوسری جانب سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے قائد میاں محمد نواز شریف کو دل کا دورہ پڑنے کا انکشاف کیا گیا ہے۔ اس حوالے سے سابق وزیراعظم کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے بتایا ہے کہ نواز شریف جب لاہور میں تھے تو انہیں دل کا دورہ پڑا تھا۔
ڈاکٹر عدنان کا بتانا ہے کہ آج لندن کے گائز اسپتال میں دل کےسرجن اور گردوں کے امراض کے ماہر ڈاکٹر نواز شریف کا معائنہ کریں گے۔2 روز قبل نواز شریف کا لندن برج کے قریب اسپتال میں طبی معائنہ ہونا تھا تاہم وہاں حملے کے باعث ان کا معائنہ نہیں ہو سکا تھا۔ 28 نومبر کو نواز شریف کا پوزیٹرون ایمیشن ٹوموگرافی (پی ای ٹی) اسکین کیا گیا تھا جس کی رپورٹ بھی آج آنے کا امکان ہے۔
ڈاکٹر عدنان کا کہنا ہے کہ ممکنہ طور پر لندن میں دل کے سرجن کی جانب سے نواز شریف کا آپریشن کیا جا سکتا ہے۔ نواز شریف کے دماغ کو جانے والی وہ شریان جو بند ہے اسے ٹھیک کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ دوسری جانب حسین نواز کا کہنا ہے کہ خواہش ہے کہ نوازشریف کا علاج ایک چھت تلے ہو لیکن ان کی طبیعت میں بہتری کے آثار نظر نہیں آ رہے۔ حسین نواز کا مزید کہنا ہے کہ والد کو متعدد بار مشورہ دیا ہے کہ امریکا سے علاج کروا لیں لیکن وہ فی الحال راضی نہیں ہو رہے۔

تاریخ اشاعت : پیر 2 دسمبر 2019

Share On Whatsapp