حکومتی اتحادی اراکین قومی اسمبلی کا وزیراعظم سے ناراضگی کا اظہار

نئے پاکستان کا نعرہ سن کرخان صاحب کی حمایت کا اعلان کیا، لیکن پچھلے 14 مہینے میں ایک نائب قاصد بھی بھرتی نہیں کیا گیا، نہیں لگتا کہ ہم ملازمتیں دے سکیں گے، وزیراعلیٰ انتقام کا نشانہ بنا رہے ہیں، کوئی نوٹس نہیں لیا جاتا۔ اراکن قومی اسمبلی اسلم بھوتانی، آغا حسن بلوچ کی گفتگو

لاہور : حکومتی اتحادی اراکین قومی اسمبلی نے وزیراعظم عمران خان سے ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ نئے پاکستان کا نعرہ سن کرخان صاحب کی حمایت کا اعلان کیا، لیکن پچھلے 14 مہینے میں ایک نائب قاصد بھی بھرتی نہیں کیا گیا، نظر نہیں آرہا کہ ہم لوگوں کو ملازمتیں دے سکیں گے، وزیراعلیٰ انتقام کا نشانہ بنا رہے ہیں،وزیراعظم کو شکایت پر بھی کوئی نوٹس نہیں لیاجاتا۔
گوادر سے آزاد رکن قومی اسمبلی اسلم بھوتانی اوربی این پی مینگل کے رکن قومی اسمبلی آغا حسن بلوچ آج نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کررہے تھے۔گوادر سے آزاد رکن قومی اسمبلی اسلم بھوتانی نے کہا کہ میں نے نیاپاکستان کا نعرہ سن کرخان صاحب کی حمایت کا اعلان کیا۔ میں 14 مہینے میں ایک نائب قاصد بھی بھرتی نہیں کرواسکا، مجھے مستقبل میں بھی ایسا نظر نہیں آرہا کہ ہم لوگوں کو ملازمتیں دے سکیں گے۔
ہمارا ایک ہی ضلع ہے اوروہاں وزیراعلیٰ مجھے انتقام کا نشانہ بنا رہا ہے۔ مجھ سے جو بھی سرکاری ملازم ملتا ہے وزیراعلیٰ اس کو اگلے روز ہی چھٹی کروا دیتا ہے۔ اسلم بھوتانی نے کہا کہ میں نے خان صاحب سے شکایت کی کہ میں آپ کا اتحادی ہوں اور میرے ساتھ صوبے میں یہ سب کچھ ہورہا ہے، وہ کہتے اچھا میں جام کمال سے بات کروں گا، لیکن اس کے بعد کچھ بھی نہیں ہوتا۔
انہوں نے کہا کہ ہمیں کوئی کام نہیں کرنے دیا جارہا، لسٹیں دی جاتی ہیں کہ فلاں فلاں کو نوکریاں دے دو، لیکن اس لسٹ میں اسلم بھوتانی کا کوئی بندہ شامل نہ ہو۔اسی طرح بلوچستان نیشنل پارٹی مینگل کے رکن قومی اسمبلی آغا حسن بلوچ نے ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میں نے وزیراعظم سے کہا کہ ہم آپ کے اتحادی ہیں، ہم بے شک آزاد بنچوں پر بیٹھتے ہیں لیکن ہم نے آپ کو وزیراعظم کا ووٹ دیا ہوا ہے۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال ان بندوں کو کریڈٹ دینے کی کوشش کررہے ہیں جو منتخب نہیں ہوئے جبکہ ہمارے اقدامات میں روڑے اٹکائے جارہے ہیں۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 21 نومبر 2019

Share On Whatsapp