دُبئی: اپنے سے 10 سال بڑی خاتون سے زیادتی کرنے والے کم سن نوجوان کو سزا ہو گئی

19 سالہ ملزم نے 29 سالہ لڑکی کو نوکری دلانے کے بہانے گاڑی میں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا

دُبئی : مقامی عدالت نے کم سن اماراتی نوجوان کو اپنے سے 10 سال بڑی خاتون کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے جُرم میں 6ماہ قید کی سزا سُنا دی ہے۔ خاتون کی جانب سے الرشیدیہ پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کرائی گئی۔ متاثرہ لڑکی نے عدالت کو بتایا کہ اس کا تعلق افریقی ملک کینیا سے ہے۔ وہ ملازمت تلاش کرنے کی خاطر دُبئی آئی تھی۔وقوعہ کے روز اسے اس کے ایک ہم وطن مرد کا فون آیا جس نے اُسے کہا کہ وہ دُبئی سے شارجہ کے علاقے النہدہ میں واقع ایک شاپنگ مال میں آ جائے، ٹیکسی کاکرایہ وہ خود ادا کردے گا۔
خاتون اپنے ہم وطن کے بتائے گئے شاپنگ مال کی پارکنگ میں پہنچ گئی۔ جہاں اس کا جاننے والا شخص ایک کم سن لڑکے کے ساتھ موجود تھا۔ افریقی شخص لڑکی کو نوجوان کے ساتھ گاڑی میں بٹھا کر کہیں اور چلا گیا۔ تھوڑی دیر بعد نوجوان نے گاڑی چلا دی۔ لڑکی نے اُسے پوچھا کہ وہ اُسے کہاں لے جا رہا ہے۔ لڑکے نے جواب دیا کہ وہ اسے اس کی ملازمت کی جگہ دکھانے اور ذمہ داریاں سمجھانے کے لیے کہیں لے کر جا رہا ہے۔
تھوڑی دیر بعداماراتی نوجوان نے گاڑی ایک زیر تعمیر بلڈنگ کے قریب روک دی۔ اچانک نوجوان اس پر حملہ آور ہو گیا۔ جب لڑکی نے مزاحمت کی تو نوجوان نے اپنے پاس موجود پستول نکال لی اور اسے ڈرا دھمکا کر پہلے اس کی شرٹ پھاڑی اور پھر اسے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ نوجوان نے اس دوران خود کو ایک انجکشن بھی لگایا۔ متاثرہ لڑکی نے بتایا کہ لڑکے نے اسے ایک گھنٹہ مسلسل زیادتی کا نشانہ بنایا۔
اور پھر اسے دھمکی دی کہ کسی کو اس بارے میں نہ بتائے، ورنہ انجام اچھا نہیں ہو گا۔ لڑکی نے سارے وقوعے کی خبر پولیس کو دے دی۔ جس نے نوجوان کو گرفتار کر لیا تاہم وہ مسلسل اس بات پر اصرار کرتا رہا کہ خاتون نے اس کے ساتھ مرضی سے جنسی عمل کیا ہے۔تاہم عدالت نے ثبوتوں کو مدنظر رکھتے ہوئے ملزم کو سزا سُنادی ہے۔ کم سن نوجوان کو فیصلے کے خلاف 15 دِن کے اندر اپیل کرنے کا حق دیا گیا ہے۔

تاریخ اشاعت : ہفتہ 16 نومبر 2019

Share On Whatsapp