نواز شریف کو غلط مشورے دیئے جا رہے ہیں

نوازشریف کس خوف سے انڈیمنٹی بانڈ نہیں دے رہے؟ سینئیر صحافی معید پیرزادہ نے انکشاف کر دیا


Warning: call_user_func_array() expects parameter 1 to be a valid callback, function 'show_embed_live_video' not found or invalid function name in /home/urduquick/public_html/functions.php on line 87
لاہور : : نجی ٹی وی چینل پر بات کرتے ہوئے سینئیر صحافی و تجزیہ کار معید پیرزادہ نے کہا کہ اگر حکومت نواز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دیتی ہے تو حکومت کے اپنے لوگ ہی سوالات کریں گے کہ آپ نے نواز شریف کو این آر او دے دیا ہے۔ حکومت میں آنے سے پہلے اور حکومت میں آنے کے بعد بھی عمران خان نے بار ہا واضح کہا تھا کہ ہم کسی کو این آر او نہیں دیں گے۔
نواز شریف کی طبیعت کی وجہ سے صورتحال ایسی بن گئی ہے کہ حکومت پر دباؤ آ گیا ہے اور افواہیں یہ بھی ہیں کہ بیرون ممالک کی جانب سے بھی حکومت پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے۔ یہ بھی خشہ ہے کہ کہیں نواز شریف کو کچھ ہو گیا تو ذمہ داری حکومت پر آئے گی لہٰذا انہیں جانے دیا جائے۔ دوسری جانب مسلم لیگ ن اپنی اخلاقیات کو مد نظر رکھتے ہوئے حکومت کو کوئی ایسی چیز نہیں دینا چاہتی جس سے اُن کے سپورٹرز شکوک کا شکار ہوں۔
انہوں نے کہاکہ شریف خاندان نے 48 گھنٹے ضائع کر دئے ہیں۔ ایڈیمنٹی بانڈ صرف ایک اسٹامپ پیپر ہے پچاس روپے یا سو روپے کا ، جس پر انہیں یہ لکھ کر دینا ہے کہ میں حکومت کی جانب سے اجازت ملنے کے لیے بیرون ملک علاج کے لیے جا رہا ہوں۔ جب میری طبیعت ٹھیک ہو جائے گی تو میں واپس آ کر اپنے خلاف کیسز کا سامنا کروں گا اور اگر میں واپس نہ آیا تو میں یہ جُرمانے ادا کرنے کا پابند ہوں گا۔
یہ ایک ایسی تحریر ہے جو یہ لکھ کر نہیں دینا چاہتے۔ انہوں نے مزید کیا کہا آپ بھی دیکھیں: واضح رہے کہ نواز شریف کے بیرون ملک جانے کے معاملے پر تاحال ڈیڈ لاک ہے۔ تاہم اب دیکھنا یہ ہے کہ شریف خاندان اس حوالے سے کیا فیصلہ کرتا ہے ؟ کیونکہ اگر نواز شریف کی طبیعت اتنی تشویشناک ہے تو پھر شریف خاندان کو شورٹی بانڈز جمع کروانے میں ذرا بھی تاخیر نہیں کرنی چاہئیے۔ لیکن اگر تاخیر ہو رہی ہے تو پھر نواز شریف کی طبیعت خرابی کی اطلاعات پر شکوک و شُبہات پیدا ہو رہے ہیں اور سوالات اُٹھائے جا رہے ہیں کہ کیا نواز شریف واقعی بیمار ہیں یا پھر یہ سب انہیں بیرون ملک لے جانے کے لیے کیا جا رہا ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 15 نومبر 2019

Share On Whatsapp