دھرنا مارچ سے حکومت پر کوئی اثر نہیں پڑے گا،رحمان ملک

, ٓپاکستان نے کرتارپور راہداری سکھوں کے لئے کھول کر اپنی ذمہ داری پوری کی ہے، میڈیا سے گفتگو

اسلام آباد : پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما سینیٹر رحمان ملک نے کہا ہے کہ دھرنا مارچ سے حکومت پر کوئی اثر نہیں پڑے گا، پاکستان نے کرتارپور راہداری سکھوں کے لئے کھول کر اپنی ذمہ داری پوری کی ہے، اب بھارت کشمیری سکھوں اور پاکستان کی ہندو برادری کو بھی گنگا پر جانے کے لئے اقدامات کرے۔ جمعہ کو پارلیمنٹ ہائوس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر عبدالرحمان ملک نے کہا کہ پاکستان نے کرتارپور راہداری کھول کر اپنی ذمہ داری پوری کی اور دوستی کا ایک اور قدم آگے بڑھایا ہے۔
اب وقت آ گیا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں بسنے والی سکھ برادری کو پاکستان آنے کے لئے سہولیات فراہم کرے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم پاکستانی ہندو برادری کو گنگا سمیت دوسرے مذہبی مقامات پر جانے کے لئے ویزا سمیت دیگر سہولیات فراہم کریں تاکہ دونوں ممالک کے درمیان دوستی اور بھائی چارے کی طرف پیشرفت ہو سکے۔انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان نے کرتارپور راہداری منصوبہ کھول کر خوش آئند فیصلہ کیا، اس کا خیرمقدم کرتے ہیں۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ دھرنا اگر ڈی چوک میں ہوتا تو حکومت کے لئے مشکلات ہوتیں، اس آزادی مارچ سے حکومت پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ حکومت اور آزادی مارچ کی قیادت کے درمیان مذاکرات جاری ہیں۔ توقع ہے کہ فریقین تصادم کی طرف نہیں جائیں گے۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 8 نومبر 2019

Share On Whatsapp