پاکستان کی آسٹریلیا کے خلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز میں شکست پر صدر جنید علی شاہ کا رد عمل

کراچی۔ : سابق صوبائی وزیر کھیل اور صدر کراچی ہاکی ایسوسی ایشن ڈاکٹر سید جنید علی شاہ نے پاکستان کی آسٹریلیا کے خلاف ٹی ٹوئینٹی سیریز میں شکست پر اپنے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مصباح الحق کو بیک وقت دوہری ذمہ داری دینا پاکستان کرکٹ بورڈ کا غیر دانشمندانہ فیصلہ ثابت ہورہا ہے، آسٹریلیا جیسی مظبوط ٹیم کے خلاف سینیئر اور تجربہ کار پلیرز شعیب ملک اور محمد حفیظ کو ٹیم میں شامل نہ کرنا سلیکشن کمیٹی کی فاش غلطی تھی۔
جمعہ کو جاری کردہ بیان میں انہوں نے کہا کہ فخر زمان کو مسلسل ناکامی کے بعد بھی کافی چانس دیئے گئے جو سمجھ سے بالاتر ہے، سابق کپتان سرفراز احمد ایک سیریز میں بیٹنگ میں فلاپ ہونے کے بعد ٹیم سے فارغ کر دئیے گئے لیکن فخر زمان مسلسل ناکامی کے بعد بھی دوسرے ٹی ٹوئینٹی تک ٹیم کا حصہ رہے، اس سے سلیکشن کمیٹی کے سربراہ کی جانبداری کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔
ڈاکٹر سید جنید علی شاہ نے کہا کہ سندھ کی ٹیم نے حالیہ انڈر نانٹین قومی ٹورنامنٹ جیت کر یہ ثابت کردیا کہ کراچی سمیت اندورن سندھ میں بہت ٹیلنٹ ہے لیکن حیرت انگیز طور پر کراچی کے حقدار کھلاڑیوں کے ساتھ ہنوز ناانصافی کا سلسلہ جاری ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سرفراز احمد کو یہ کریڈٹ تو جاتا ہے کہ اس نے پاکستان ٹیم کو ٹی ٹوئینٹی فارمیٹ میں نمبر ون بنوایا لیکن افسوس کی بات ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس کی خدمات کا سلسلہ نہیں دیا، کم از کم انہیں ٹی ٹوئینٹی ٹیم کا کپتان برقرار رکھا جاسکتا تھا۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو چاہئیے کہ شرجیل خان کو فوری ٹیم میں شامل کرنے کیلئے جو بھی لیگل ضروریات باقی ہیں ان کو جلد پورا کراکے ٹیم میں شامل کرے، بحیثیت اوپنر وہ ٹیم کیلئے بہت سودمند ثابت ہوگا خاص طور پر ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں اس کی ٹیم میں شمولیت اہم ہوگی۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 8 نومبر 2019

Share On Whatsapp