این ڈی ایم اے کی جانب سے پاکستان سکول سیفٹی فریم ورک کو پنجاب کے تعلیمی نظام میں شامل کرنے کے حوالے سے 2 روزہ مشاورتی اجلاس کا انعقاد

, بچے ہمارا مستقبل ،انکی حفاظت اولین ترجیح ہے ،سکولوں کی حفاظت کو یقینی بنانا ناگزیر ہے ،پاکستان سکول سیفٹی فریم ورک اس ضمن میں مددگار ثابت ہو گا،صوبائی و زیر تعلیم مراد راس

اسلام آباد : نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم ای) نے پاکستان سکول سیفٹی فریم ورک کو پنجاب کے تعلیمی نظام میں شامل کرنے اور فریم ورک کو صوبائی سطح پر لاگو کرنے کے حوالے سے 5سے 7نومبر تک 2 روزہ میٹنگ کا انعقاد کیا ۔ میٹنگ کا بنیادی مقصد فریم ورک کو صوبائی سطح پر لاگو کرنے کے لیے تمام معاون اداروں میں آگاہی اور ذمہ داریوں کے تعین کے ساتھ ساتھ فریم ورک کو لاگو کرنے میں درپیش ممکنہ مسائل اور ان کے حل کے حوالے سے مشاورت کرنا تھا ۔
اس فریم ورک کو لاگو کرنے سے آفات اور ہنگامی صور ت حال میں سکول کے بچوں کوتحفظ فراہم کرنے میں مدد ملے گی۔وزیر برائے اعلی تعلیم و انفارمیشن ٹیکنالوجی راجہ یاسر ہمایوں سرفراز ، صوبائی وزیر برائے تعلیم مراد راس، وزیر برائے ڈیزاسٹر مینجمنٹ میاں خالد محمد ، محکمہ اعلی تعلیم و لٹریسی پنجاب کے ڈپٹی سیکریٹریزکے علاوہ این ڈی ایم اے، پی ڈی ایم اے ٹیکنیکل پارٹنر، محکم تعلیم پنجاب ، ریسکیو 1122 ، پاکستان گرل گائیڈ ایسوسی ایشن اور دیگر متعلقہ صوبائی اداروں کے 60 سے زائد نمائندگان نے مشاورتی میٹنگ میں شرکت کی ۔
میٹنگ کے شراکاء سے اظہار خیال کرتے ہوئے صوبائی و زیر تعلیم مراد راس نے کہا کہ بچے ہمارا مستقبل ہیں اور ان کی حفاظت ہماری اولین ترجیح ہے جس کے لیے سکولوں کی حفاظت کو یقینی بنانا ناگزیر ہے اور پاکستان سکول سیفٹی فریم ورک اس ضمن میں مددگار ثابت ہو گا۔ بعد ازاں ممبر ڈیزاسٹر رسک ریڈکشن این ڈی ایم اے ادریس محسود نے شراکاء سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان سکول سیفٹی فریم ورک کو صوبائی سطح پر لاگو کرنے کے حوالے سے وزیر اعظم نے 28 مارچ 2018 کو ہونے والی پانچویںNDMC میٹنگ میں احکامات جاری کیئے تھے ۔ انہوں نے مزیدکہا کہ اس فریم ورک کی مدد سے کسی بھی ہنگامی صورت حال میں سکول کے بچوں کے تحفظ کو یقینی بنایا جا سکے گا۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 8 نومبر 2019

Share On Whatsapp