انسانی اسمگلر کی کمال ہوشیاری، ایک ہی گاڑی میں چھُپائے 16 افراد

پولیس والے بھی سعودی شہری کی ہوشیاری جان کر دنگ رہ گئے

ریاض : دُنیا بھر میں انسانی اسمگلر ایسے ایسے نِت نئے طریقے تلاش کرتے ہیں کہ انسانی عقل حیران پریشان رہ جاتی ہے۔ ایسا ہی ایک انوکھا کام سعودی باشندے نے کر دکھایا، جس کی ہوشیاری کے بارے میں جان کر پولیس والے بھی دنگ رہ گئے۔ ایک مقامی اخبار کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سعودی پولیس نے حوطہ بنی تمیم میں ایک سعودی شہری کو ایک درجن سے زائد غیر قانونی تارکین وطن کو اسمگل کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔
حیرت کی بات یہ ہے کہ اُس نے 16 افراد کو اپنی گاڑی میں کس خوبی سے ایڈجسٹ کر رکھا تھا کہ پولیس کو بھی پہلے پہل اس کی کارروائی پر شک نہ ہو سکا۔ پولیس ترجمان نے بتایا کہ حوطہ بنی تمیم میں پولیس کی ایک ٹیم گشت پرتھی جب انہوں نے ایک سعودی شہری کی کار کو روکا۔ جس نے اپنی گاڑی کے سائیڈ والے شیشے اسٹیکر لگا کر کالے کر رکھے تھے۔ جس کے باعث اندر دیکھنا ممکن نہیں تھا۔
سعودی ڈرائیور نے اپنے ساتھ بیٹھے دو افراد کا تعارف دوستوں کی حیثیت سے کرایا۔ تاہم پولیس والوں نے معمول کی چیکنگ کی خاطر ڈرائیور سے گاڑی کا پچھلا دروازہ کھُلوایا تو وہاں سے چار پانچ نہیں، پورے 16 افراد برآمد ہوئے، جو تمام کے تمام غیر قانونی تارکین تھے۔ ڈرائیور نے گاڑی کی پچھلی جانب کی سیٹیں نکال کر خاصی جگہ بنائی ہوئی تھی اور کیبن میں تمام افراد کو اس زبردست طریقے سے بٹھایا گیا تھا کہ باہر سے دیکھنے پر کوئی اندازہ نہیں کر سکتا تھا کہ اس میں اتنے زیادہ افراد بیٹھے ہوں گے۔
پولیس نے سعودی ڈرائیور کو انسانی اسمگلنگ کے جُرم میں گرفتار کر لیا۔ ڈرائیور نے انکشاف کیا کہ اُس نے بھاری رقم کے لالچ میں ان غیر قانونی تارکین کو دُوسرے شہر پہنچانا تھا۔ پولیس نے سعودی ڈرائیور اور دیگر تمام افراد کو گرفتار کر کے متعلقہ ادارے کے سپرد کر دیا ہے۔ واضح رہے کہ سعودی عرب میں غیر قانونی تارکین وطن کے خلاف کریک ڈاؤن میں مزید تیزی آ گئی ہے۔ سعودی وزارت داخلہ کے مطابق نومبر 2017ء سے لے کر اب تک مملکت سے 41 لاکھ غیر قانونی تارکین پکڑے جا چکے ہیں، جن میں سے 10لاکھ سے زائد کو ڈی پورٹ کیا جا چکا ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 8 نومبر 2019

Share On Whatsapp