عوام کیلئے خوشخبری، اورنج لائن میٹرو ٹرین چلنے کے لئے تیار

عوام جنوری میں ٹرین پر سفر کر سکیں گے،ٹرین کا کرایہ عام آدمی کی پہنچ میں رکھا جائے گا۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار

لاہور : عوام کے لیے بڑی خوشخبری آ گئی ہے۔اورنج لائن میٹرو ٹرین چلنے کے لیے تیارہو گئی ہے۔اورنج لائن میٹرو 28 اکتوبر سے ڈیرہ گجراں تا انار کلی تک چلائی جا سکے گی۔وزیراعلیٰ پنجاب کی زیر صدارت اجلاس میں بریف کیا گیا کہ ٹرین کو پہلی بار سے چلانے کا آزمائشی ٹرائل کیا جائے گا،ڈیرہ گجراں سے انار کلی تک 13 اسٹیشنز پر کام کر لیا گیا ہے۔11 دیگر سٹیشنز پر کام نومبر کے اوائل تک مکمل کر لیا جائے گا۔
ان سٹیشن پر کام مکمل ہونے کے بعد اورنج لائن میٹرو ٹرین کو پورے ٹریک پر بجلی سے چلا کر آزمائشی ٹرائل کیا جائے گا۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار کا کہنا ہے کہ جنوری میں ٹرین عوام پر سفر کر سکیں گے۔ٹرین کا کرایہ عام آدمی کی پہنچ میں رکھا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق صوبائی وزیر میاں اسلم اقبال نے 22اکتوبر کو آزمائشی طور پر اورنج لائن ٹرین کو چلانے کا اعلان کیا تھا تاہم گزشتہ روز یہ اطلاعات تھیں کہ اسے ایک ہفتے کے لئے ملتوی کر دیا گیا ہے ۔
دوبارہ اچانک فیصلہ کیا گیا اور اورنج لائن ٹرین کا ڈیرہ گجراں سے چوبرجی تک آزمائشی ٹرائل کیا گیا ۔ایک انجن او رپانچ بوگیوں کے ساتھ 30 سے 60 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلایا گیا۔اورنج لائن ٹرین کو کو انڈر گراؤنڈ انار کلی اسٹیشن سے گزارا گیا ۔آزمائشی ٹرائل کو چینی کمپنی سی ای سی اورسی آر نورینکو نے بخوبی انجام دیا ۔ممکنہ طو رپر وزیر اعلیٰ پنجاب رواں ماہ میں آزمائشی ٹرائل کا معائنہ کریں گے۔
اس سے قبل گزشتہ ماہ سپریم کورٹ نے بھی اورنج لائن منصوبہ جلد سے جل مکمل کرنے کی ہدایت کی تھی۔ گزشتہ ماہ ہونے والی سماعت کے دوران سیکرٹری ٹرانسپورٹ نے بتایا تھا کہ منصوبے پراب تک 169 بلین روپے خرچ ہوچکے ہیں اورمزید اخراجات بھی ہوں گے۔ سماعت کے دوران پراجیکٹ ڈائریکٹرنے استدعا کی کہ میٹرو ٹرین منصوبے کی تکمیل کیلئے جنوری 2020ء تک مہلت دی جائے جس میں آزمائشی ٹرین چلانے سمیت دیگر تکنیکی امور کی جانچ پڑتال کی جائے گی۔
درخواست پر عدالت نے 2020ء تک مہلت دینے کی استدعا منظور کرتے ہوئے ہدایت کی کہ منصوبہ مقررہ وقت میں مکمل کیا جائے۔ واضح رہے کہ یہ منصوبہ مسلم لیگ ن کی پچھلی حکومت نے شروع کیا تھا جو اکتوبر 2018 ء میں مکمل ہونا تھا۔ لیکن مقررہ مدت سے ایک سال کا عرصہ گزرنے کے باوجود کام مکمل نہیں ہوسکا۔

تاریخ اشاعت : بدھ 23 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp