حسین نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے نواز شریف کو زہر دینے کا الزام عائد کر دیا

سابق وزیراعظم کو پیر کی شب کو طبیعت ناساز ہونے پر ہنگامی بنیادوں پر لاہور کے سروسز ہسپتال منتقل کیا گیا

لاہور : حسین نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے نواز شریف کو زہر دینے کا الزام عائد کر دیا، سابق وزیراعظم کو پیر کی شب کو طبیعت ناساز ہونے پر ہنگامی بنیادوں پر لاہور کے سروسز ہسپتال منتقل کیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق لاہور کے اڈیالہ جیل میں قید سابق وزیراعظم نواز شریف کی حالت بگڑ گئی۔ نواز شریف کے معالج ڈاکٹر عدنان کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ سابق وزیراعظم کی پلیٹ لیٹس کی رپورٹ غیر تسلی بخش آئی ہے۔
نواز شریف کی تازہ ترین میڈیکل رپورٹ آنے کے بعد نیب نے انہیں فوری بنیادوں پر علاج کیلئے ہسپتال منتقل کرنے کا فیصلہ کیا۔ بتایا گیا ہے کہ نیب نے نواز شریف کو لاہور کے سروسز ہسپتال میں علاج کیلئے منتقل کر دیا۔ سروسز ہسپتال میں نواز شریف کے مزید ٹیسٹ کیے جائیں گے۔ نواز شریف کی صحت کی خرابی سے متعلق ان کے داماد محمد صفدر اور صاحبزادے حسین نواز کی جانب سے سنگین الزام عائد کیا گیا ہے۔
محمد صفدر اور حسین نواز نے الزام عائد کیا ہے کہ نواز شریف کو زہر دیا گیا ہے جس باعث ان کی زندگی اب خطرے سے دوچار ہے۔ تاہم ڈاکٹرز کی جانب سے اس الزام کی تصدیق نہی کی گئی۔ نواز شریف کیلئے تشکیل دیے گئے میڈیکل بورڈ کے ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم کے پلیٹ لیٹس کاونٹس کی کمی کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں۔ ان وجوہات میں ڈینگی کا مرض لاحق ہونا یا ادویات کا زیادہ استعمال بھی ہو سکتا ہے۔
ڈاکٹرز کی جانب سے کہا گیا ہے کہ نواز شریف کے مزید میڈیکل ٹیسٹس کیے جانے کے بعد ہی واضح ہوگا کہ ان کے پلیٹ لیٹس کس وجہ سے کمی کا شکار ہوئے ہیں۔ مزید بتایا گیا ہے کہ رپورٹ کے مطابق نوازشریف کا پلیٹلیٹ کاؤنٹ 16 ہزار آ رہا ہے۔ نواز شریف کی صحت کا جائزہ لینے کیلئے سروسز ہسپتال کے سینئر ڈاکٹرز پر مشتمل ایک میڈیکل بورڈ بھی تشکیل دے دیا گیا ہے۔ دوسری جانب صدر مسلم لیگ ن شہباز شریف نے نواز شریف کی حالت بگڑنے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا ہے اور حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ سابق وزیراعظم کو علاج کی مکمل سہولیات فراہم کی جائیں۔ جبکہ نواز شریف کی حالت بگڑنے پر مسلم لیگ ن کے کارکنوں کی جانب سے لاہور کی ملتان روڈ پر احتجاجی مظاہرہ کیا جا رہا ہے۔

تاریخ اشاعت : منگل 22 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp