دُبئی میں مقیم پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور نے کزن کو مار ڈالا

ملزم سے اس قتل کی وجہ پُوچھی گئی تو اُس کا کہنا تھا ”بس اچانک ہو گیا“

دُبئی : دُبئی میں مقیم ایک پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور نے اپنےکزن کو چاقو کے وار کر کے مار ڈالا۔ ملزم اور مقتول دونوں ایک ہی کمرے میں مقیم تھے۔ سرکاری استغاثہ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ یہ واقعہ المرقبت کے علاقے ہور ال انز میں ایک رہائشی عمارت میں پیش آیا۔ ملزم کے چاقو کے پے در پے وار سے بدنصیب نوجوان موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا۔ کمرے میں مقیم ان کے تیسرے ساتھی پاکستانی ایگریکلچرل انجینئر نے بتایا کہ وہ رات 1 بجے کے قریب مرنے والے شخص کی چیخ و پُکار سُن کر نیند سے جاگا تو اُس نے دیکھا کہ ملزم نے ہاتھ میں چاقو پکڑا ہوا تھا اور اپنے کزن کو بار بار گھونپ رہا تھا۔
میں نے تیزی سے آگے بڑھ کر ملزم کو قابو کر لیا اور اُسے پیچھے ہٹا کر مزید وار کرنے سے روک لیا۔ مگر تب تک بہت دیر ہو چکی تھی۔ خون میں لت پت نوجوان نے تھوڑی دیر بعد ہی دم توڑ دیا۔ ایک پولیس اہلکار نے بتایا کہ جب وہ موقع پر پہنچا تو دیکھا کہ مقتول اپنے بیڈ پر مردہ حالت میں پڑا تھا اور اُس کے پیٹ اور سینے پر چاقو کے گہرے گھاؤ تھے۔ جبکہ ملزم کمرے کے باہر بیٹھا ہوا تھا۔
جبکہ واردات میں استعمال ہونے والا چاقو بھی مقتول کے پاس ہی پڑا تھا۔ ملزم کو گرفتار کرنے کے بعد اُسے پولیس اسٹیشن منتقل کر دیا گیا۔ دورانِ تفتیش جب ملزم سے قتل کی وجہ پُوچھی گئی تو اس نے جواب دیا ”بس اچانک ہی ہو گیا۔“ ملزم نے کوئی ٹھوس وجہ بتانے سے انکار کر دیا۔ پولیس اہلکار کے مطابق اس خونی واردات کے وقت ملزم نے نہ تو شراب پی رکھی تھی اور نہ ہی اُس نے کوئی دُوسرا نشہ کیا تھا۔ وہ پُوری طرح اپنے ہوش حواس میں تھا۔ ملزم کے خلاف عدالتی کارروائی 27 اکتوبر 2019ء کو شروع ہو گی۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 17 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp