بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی کا پاکستان آنے کا فیصلہ

نریندرا مودی 8 نومبر کو کرتارپور راہداری کا افتتاح کرنے کیلیے پاکستان آئیں گے

نئی دہلی : بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی کا پاکستان آنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ بھارتی اخبار ہندوستان ٹائمز نے دعویٰ کیا ہے کہ نریندر مودی 8 نومبر کو کرتارپور راہداری کا افتتاح کرنے کیلیے پاکستان آئیں گے۔ اخبار نے اپنی رپورٹ میں بھارتی وزیر ہرسیمرات کور بادل کی ٹویٹ کا حوالہ دیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ نریندرا مودی آٹھ نومبر کو کرتارپور راہداری کا افتتاح کریں گے۔
ہرسیمرات کور بادل کے مطابق سکھ کمیونٹی کا کرتارپور صاحب کے دیدار کا خواب پورا ہونے کو ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ 8 نومبر کو تاریخ رقم ہو گی جب نریندرا مودی کرتارپور کا افتتاح کریں گے۔ جمعرات کو پاکستانی دفترخارجہ کے ترجمان نے بتایا تھا کہ کرتارپور راہداری کے افتتاح کی تاریخ فائنل نہیں ہوئی جبکہ اس پر ترقیاتی کام تیزی سے جاری ہے۔ڈاکٹر فیصل نے ہفتہ وار بریفنگ میں کہا تھا کہ کرتارپور راہداری کا افتتاح مقررہ وقت پر ہی ہوگا۔
خیال رہے کہ رواں ماہ کے آغاز میں پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ سابق بھارتی وزیراعظم منموہن سنگھ کو تحریری طور پردعوت نامہ بھجوائیں گے۔انہوں نے کہا کہ منموہن سنگھ کو دعوت دینے کا فیصلہ مشاورت کے بعد کیا گیا۔ پاکستان اور بھارت کے درمیان کرتارپور راہداری کے حوالے سے مذاکرات جاری ہیں جس میں پاکستان نے بھارت کے دونوں مطالبات تسیم کر لیے ہیں۔
پاکستان نے ایک دن میں 5 ہزارسکھ یاتریوں کی آمد اور ویزہ فری انٹری کی اجازت دے دی دی ہے۔ بھارت نے پاکستان سے مطالبہ کیا تھا کہ پاکستان ایک دن میں 5 ہزارسکھ یاتریوں کی آمد اور ویزہ فری انٹری دے، اب پاکستان نے مطالبات کو تسلیم کر لیا ہے۔ بھارت نے خصوصی مواقع پر10 ہزاریاتریوں اور بھارت کے دیگر عقائد کے لوگوں کو بھی کرتارپور آنے کی اجازت دینے کا بھی مطالبہ کیا ہے اور پاکستان نے یاتریوں کو گروپس یا انفرادی طور پر پیدل کرتارپورآنے کی اجازت دینے کا مطالبہ تسلیم کرلیا ہے۔
اس کے علاوہ بھارت نے سکھ یاتریوں کوکرتارپورمیں لنگر،پرساد تیاری اور تقسیم کی اجازت دینے کا مطالبہ کیا ہے جس کے حوالے سے ابھی مشاورت جاری ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ ماہ وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ سکھوں کیلئے ننکانہ مکہ اور کرتارپورمدینہ ہے جیسےمسلمانوں کوکتنی تکلیف ہواگر کوئی مکہ مدینہ نہ جانے دے، ویسے ہی آپ کا مسئلہ ہے، لہذا کرتارپورکھول کرکوئی احسان نہیں کیا۔

تاریخ اشاعت : اتوار 13 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp