مغربی افریقہ کے ملک برکینا فاسو کے شمالی علاقے میں مسلح افراد کا مسجد پر حملہ

مسجد پر حملے کے نتیجے میں 16 نمازی جاں بحق اور دو شدید زخمی ہوگئے

آوگاڈوگو : مغربی افریقہ کے ملک برکینا فاسو کے شمالی علاقے میں مسلح افراد نے مسجد پر حملہ کردیا۔ مسجد پر حملے کے نتیجے میں 16 نمازی جاں بحق اور دو شدید زخمی ہوگئے ہیں۔ غیرملکی خبر ایجنسی کے مطابق برکینافاسو کے شہر سالموسی میں واقع جامع مسجد میں رات گئے حملہ کیا گیا جہاں 13 نمازی موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے تھے اور دیگر تین افراد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے۔
قریبی قصبے کے ایک رہائشی کا کہنا تھا کہ اس حملے کے بعد شہریوں نے نقل مکانی شروع کردی ہے، فوج کی موجودگی کے باوجود تناؤ کا ماحول پایا جاتا ہے۔ مسجد پر حملے کے بعد ایک ہزار سے زائد افراد نے دارالحکومت اواگادوگو کی جانب امن مارچ کیا اور افریقہ میں غیر ملکی فوجی بیسز کی موجودگی اور دہشت کے خلاف احتجاج کیا ہے۔ احتجاج کے منتظمین میں شامل گیبن کوربیوگو نے کہا ہے کہ ہمارے ملک میں غیر ملکی فوجیوں کی مداخلت کے لیے دہشت گردی ایک اچھا بہانہ مل گیا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ رانسیسی، امریکی، کینیڈین، جرمن اور دیگر فوجوں نے ہمارے خطے میں قدم جمارکھے ہیں اور کہتے ہیں وہ دہشت گردی کے خلاف لڑنا چاہتے ہیں لیکن اس قدر موجودگی کے باوجود دہشت گر گروپ مضبوط تر ہوتے جارہے ہیں۔ اقوام متحدہ کے ادارے برائے مہاجرین کے اعداد وشمار کے مطابق کشیدگی کے باعث کم ازکم 5 لاکھ افراد اپنا گھربار چھوڑ کر ہجرت کرچکے ہیں جبکہ 15 لاکھ افراد کے متاثر ہونے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے انسانی بحران سے بھی خبردار کیا تھا۔ برکینافاسو میں تقریباً 3 ہزار اسکول بند ہیں اور دور دراز علاقوں میں بدترین معاشی صورت حال کے باعث ملک کی تجارت اور مارکیٹوں میں بحرانی کیفیت ہے۔

تاریخ اشاعت : اتوار 13 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp