افغان سرحد کے راستے ایل ای ڈی ٹی وی کی اسمگلنگ جاری ہے، کسٹمز حکام کااعتراف

اسمگلنگ کی وجہ سے پوری معیشت متاثر ہورہی ہے، کسٹمز سٹاف کو سب پتا ہوتا ہے کیا ہورہا ہے،دہشت گردی سے زیادہ خطرناک معاشی دہشت گردی ہے، سینیٹر شبلی فراز

اسلام آباد : سینیٹ کی قائمہ کمیٹی خزانہ کے اجلاس میں کسٹمز حکام نے اعتراف کیا ہے کہ افغان سرحد کے راستے ایل ای ڈی ٹی وی کی اسمگلنگ جاری ہے۔جمعرات کو ہونے والے اجلاس میں کمیٹی کو کسٹمز حکام کی جانب سے بتایاگیا کہ افغان سرحد کے راستے ایل ای ڈی ٹی وی کی اسمگلنگ جاری ہے،بلوچستان کے بھی بعض سرحدی علاقوں سے اسمگلنگ ہورہی ہے، اسمگلنگ روکنے کیلئے ہمارے پاس فورس کی قلت ہے۔
بتایاگیاکہ طورخم، کرم ایجنسی، شمالی وزیرستان اور چمن میں کسٹمز فورس تعینات ہے، افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کی آڑ میں بھی اسمگلنگ ہورہی ہے۔ بریفنگ میں بتایاگیاکہ ایف سی سمیت دیگر اداروں کو بھی اینٹی اسمگلنگ کے اختیارات دیئے گئے ہیں۔ سینیٹر شبلی فراز نے کہاکہ اسمگلنگ کی دو اقسام ہیں، ایک قانونی اور دوسری غیر قانونی ہے، اسمگلنگ کے زریعے انڈر انوائسنگ بھی ہوتی ہے۔
شبلی فراز نے کہاکہ 75 انچ کا اسمگل شدہ ٹی وی 60 سے 70 ہزار میں گھر میں لگا کر دیتے ہیں۔ فاروق ایچ نائیک نے کہاکہ اتنا بڑی ٹی وی تو لاکھوں میں ملتا ہے۔ شبلی فراز نے کہاکہ اسمگل شدہ ٹی وی کی گارنٹی بھی دی جاتی ہے، پشاور سے اسلام آباد اسمگلنگ کا سامان لانا کیا اتنا آسان ہی ۔ شبلی فراز نے کہاکہ اسمگلنگ کی وجہ سے پوری معیشت متاثر ہورہی ہے، کسٹمز سٹاف کو سب پتا ہوتا ہے کیا ہورہا ہے۔شبلی فراز نے کہاکہ دہشت گردی سے زیادہ خطرناک معاشی دہشت گردی ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 10 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp