الیکشن کمیشن نے غیر ملکی فنڈنگ کیس میں تحریک انصاف کی چاروں درخواستیں مسترد کر دیں

الیکشن کمیشن کی سکرونٹی کمیٹی کام جاری رکھنے اور تحریک انصاف کو کمیٹی کے سامنے 14 اکتوبر کو پیش ہونے کی ہدایت

اسلام آباد : الیکشن کمیشن نے غیر ملکی فنڈنگ کیس میں تحریک انصاف کی چاروں درخواستیں مسترد کر دیں ۔ جمعرات کو چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں تین رکنی کمیشن نے تحریک انصاف غیر ملکی فنڈنگ کیس سے متعلق چار درخواستوں پر فیصلہ سنا دیا جس کے مطابق الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کی چاروں درخواستیں مسترد کر دیں۔ الیکشن کمیشن نے سکرونٹی کمیٹی کام جاری رکھنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ الیکشن کمیشن کی تحریک انصاف کو کمیٹی کے سامنے 14 اکتوبر کو پیش ہونے کی ہدایت کی ۔
الیکشن کمیشن نے گزشتہ سماعت پر فریقین کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کیا تھا۔الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے اکبر ایس بابر نے کہاکہ الحمداللہ تحریک انصاف کی چاروں درخواستوں کو الیکشن کمیشن نے مسترد کیا،تحریک انصاف کی فنڈنگ کی سکروٹنی کا عمل اپنے منطقی انجام کو پہنچے گا۔انہوںنے کہاکہ تحریک انصاف اس سے پہلے بھی الیکشن کمیشن اور ہائیکورٹ میں درخواستیں دے چکی ہے،تحریک انصاف ہمیشہ میری ممبرشپ پر اعتراض اٹھاتی ہے،سکروٹنی کمیٹی کے 2 درجن سے زیادہ اجلاس ہو چکے ہیں۔
تحریک انصاف کیس سے بھاگنے کے لیے تاخیری حربے استعمال کر رہی ہے۔انہوںنے کہاکہ قانون کہتا ہے ہر سیاسی ورکر تک سیاسی جماعت کی تفصیلات پہنچ تک ہوں۔اکبر ایس بابر نے کہاکہ تحریک انصاف کے خلاف فنڈنگ کیس عوام کے سامنے اصل حقائق لے کر آئے گا۔ انہوںنے کہاکہ عمران خان کے ساتھ میری کوئی ذاتی دشمنی نہیں ہے،ہم نے جو اصول دوسروں کے لیے طے کیے تھے وہ اپنے لیے بھی لاگو کرنا ہونگے۔ انہوںنے کہاکہ تحریک انصاف کی حکومت کی ناکامی کی وجہ تبدیلی کے اصولوں کو اپنے اوپر لاگو نہ کرنا ہے۔انہوںنے کہاکہ پورے پاکستان کی معیشت تباہ ہو چکی ہے،انہوںنے کہاکہ میں حکومتی ٹیم کو تحریک انصاف کی ٹیم نہیں مانتا۔انہوںنے کہاکہ غریب آدمی ادھار لے کر بجلی کا دے رہا ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 10 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp