پاکستان خطے میں امن کی کاوشوں کی حمایت جاری رکھے گا،

مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ 66 دنوں سے کرفیو کے باعث انسانی بحران کی کیفیت پیدا ہوچکی ہے، چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی کی سوئزرلینڈ کے سفیر سے گفتگو

اسلام آباد : چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی نے کہا ہے کہ پاکستان خطے میں امن کی کاوشوں کی حمایت جاری رکھے گا، پاکستان نے عالمی امن کی خاطر لازوال قربانیاں دیں ہیں، مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ 66 دنوں سے کرفیو کے باعث انسانی بحران کی کیفیت پیدا ہو چکی ہے، پاکستان افغانستان میں امن کا خواہاں ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کو سوئزرلینڈ کے سفیر تھامس کولی سے ملاقات کے دوران کیا۔
ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور سمیت اہم علاقائی اور بین القوامی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ خطے کی تیزی سے بدلتی صورتحال اور حقائق کو سامنے رکھ کر امن اور ترقی کو موقع دینا لازمی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان خطے میں امن کی کاوشوں کی حمایت جاری رکھے گا۔ پاکستان نے عالمی امن کی خاطر لازوال قربانیاں دیں ہیں، دنیا کو چاہیے کہ پاکستان کی قربانیوں کو تسلیم کرے۔
چیئرمین سینیٹ نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کے بارے میں سوئزرلینڈ کے سفیر کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر میں گزشتہ66 دن سے کرفیو نافذ ہے، مقبوضہ وادی کو کھلی جیل بنا دیا گیا ہے، کرفیو کے باعث انسانی بحران کی کیفیت پیدا ہوچکی ہے، دنیا اسے ایک انسانی مسئلہ سمجھ کر اپنا کر دار ادا کرے، مقبوضہ کشمیر کے عوام کو ظلم اور جبر کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ سوئزرلینڈ مقبوضہ وادی میں بھارتی ظلم و جبر روکوانے کے لئے اپنا کردار ادا کرے۔ انہوں نے کہا کہ ملاقات میں دوطرفہ روابط، تجارتی معاونت، پارلیمانی تعلقات و ادارہ جاتی تعاون کو مزید فروغ دینے پر اتفاق کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نومبرمیں سوئزر لینڈ کی پارلیمنٹ کے سپیکر کے دورے سے پارلیمانی تعلقات کے شعبے میں ایک نئے دور کا آغاز ہوگا۔ پارلیمانی سفارتکاری اور تعاون کے ذریعے عوامی سطح پر روابط کو بڑھایا جا سکتا ہے، ملاقات میں افغان امن عمل اور حالیہ ڈائیلاگ پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان افغانستان میں امن کا خواہاں ہے۔ افغانستان کا مسئلہ سیاسی ہے اور اس کا سیاسی حل ڈائیلاگ کے ذریعے نکالنا ہوگا۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 10 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp