لاہور ہائیکورٹ، ضمانتوں کی درخواستوںکی سماعت میں سی پی او لاہور کی عدم پیشی پر اظہارِ برہمی

لاہور : لاہور ہائیکورٹ نے نقب زنی اور منشیات کے ملزمان کی ضمانتوں کی درخواستوں پر سی سی پی او لاہورکے پیش نہ ہونے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے 7 اکتوبر کو ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کا حکم دے دیا۔ جسٹس محمد قاسم خان نے سی سی پی او لاہورکے عدالت میں پیش نہ ہونے پر ریمارکس دیئے کہ جس آفیسر کو بلایا جائے وہی عدالت میں پیش ہو۔ جسٹس محمد قاسم خان نے ڈی آئی جی آپریشن اور ڈی آئی جی انویسٹی گیشن کے پیش ہونے پر اظہارِ ناراضگی کرتے ہوئے کہا کہ آپ لوگوں کو تو عدالت نے بلایا ہی نہیں ،آپ کیوں آئے، جس پر ڈی آئی جی نے عدالت کو بتایاکہ سی سی پی او میٹنگ میں مصروف تھے اس لئے پیش نہیں ہوسکے، جس پر عدالت نے سی سی پی او لاہور بی اے ناصر کو 7 اکتوبر کو عدالت میں پیش ہونے کا حکم دے دیا۔
جسٹس محمد قاسم خان ملزمان عثمان اور ربنواز کی درخواستوں پر سماعت کررہے تھے، ملزم عثمان پر تھانہ نواں کوٹ میں منشیات کا مقدمہ درج ہے جبکہ ملزم ربنواز پر تھانہ جوہر ٹائون میں نقب زنی کا مقدمہ درج ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 4 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp