چیئرمین نیب کے تقرر کیخلاف اور نیب کی کارروائیوں کو کالعدم قرار دینے کی درخواست پر سماعت آئندہ ہفتے تک ملتوی

لاہور : لاہور ہائیکورٹ نے چیئرمین نیب کے تقرر کے خلاف اور نیب کی کارروائیوں کو کالعدم قرار دینے کی درخواست پر سماعت آئندہ ہفتے کے لیے ملتوی کردی ۔لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی نے اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی ۔ درخواست گزار نے موقف اپنایا کہ نیب آرڈیننس 1999 میں نیب بیورو کی تشکیل کا کوئی تصور موجود نہیں، کس نے اس کو بنایا، ممبران کی تعداد کتنی ہے، کچھ واضح نہیں، چیئرمین نیب کے تقرر کا طریقہ موجود ہے لیکن بیورو کے ڈی جی کے تقرر کا طریقہ موجود نہیں ۔
صدر پاکستان نے چیئرمین نیب کی تقرری وزیراعظم اور کابینہ کی ہدایت کے بغیر کی،وزیراعظم اور کابینہ سے ہدایات ملنے کے بعد صدرر مملکت کو چیئرمین کی تقرری کرنے کا اختیار حاصل ہے،مملکت آئین کے آرٹیکل 48 (1) کے تحت وزیراعظم اور کابینہ کی ہدایت کے بغیر کوئی بھی کام نہیں کر سکتے۔ استدعا ہے کہ نیب آرڈیننس کی دفعہ 6 بی کو آئین کے آرٹیکل 48 سے متصادم ،چیئرمین نیب کا تقرر اورنیب آرڈیننس کے تحت ملزموں کو سنائی گئی سزائیں ،ریفرنسز اور مقدمات کالعدم قرار دئیے جائیں۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 4 اکتوبر 2019

Share On Whatsapp