اردن کے بادشاہ کا بھیس بدل کر ملک کی شاہراؤں کا دورہ

سروے کرتے ہوئے عام لباس کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل

لاہور ۔ :   حضرت عمر فاروق ؓ نے حکمرانی کی جو مثال اور نظام قائم کیا اس کے جیسا کوئی اور نہیں کر سکا۔مغرب میں بھی آج ان کے ماڈل کو فالو کیا جاتا ہے۔مگر پھر بھی دنیا میں کئی ایسے حکمران اور اعلیٰ عہدیداران موجود ہیں جو اپنی رعایا کا دکھ سکھ جاننے کے لیے مختلف حربے آزماتے رہتے ہیں اور اسی وجہ سے دنیا بھر میں مشہور بھی ہوتے ہیں۔کینیا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو اس وجہ سے مشہور ہیں کہ وہ عوام دوست ہیں اور بغیر کسی پروٹوکول کے کھلے عام پھرتے نظر آتے ہیں۔
اب اسی طرح اردن کے بادشاہ نے بھی شہرت حاصل کی ہے مگر انہوں نے کھلے عام تو ملک کی شاہراؤں کی سیر نہیں کی البتہ بھیس دل کر ضرور کی ہے۔وہ اکثر عام آدمی کا روپ دھار کر مارکیٹ یا پبلک پلیس پر جاتے اور لوگوں کی رائے جاننے کی کوشش کرتے رہتے ہیں۔شاہ اردن عبداللہ دوئم کی جانب سے حکومتی اداروں کی کارکردگی جاننے کیلئے خفیہ دورہ کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئیں۔
اردنی اخبار کے مطابق شاہ عبداللہ نے غریب شہری کا روپ دھار کر محکمہ لینڈ اینڈ سروے کا دورہ کیا اور وہاں پر عملے کی کارکردگی کا قریب سے جائزہ لیا۔اس دوران شاہ کو پہنچاننے والے یا مشابہہ سمجھنے والے ایک شخص نے تصویر کھینچ کر انٹرنیٹ پر ڈال دی، جو وائرل ہوگئی۔شاہ عبداللہ کا عوام کے حال احوال اور اداروں کی کارکردگی جاننے کیلئے خفیہ دورے کرنا کوئی نئی بات نہیں۔
اس سے قبل انہوں نے سال 2009 میں عام شہری کا روپ دھار کر طبی اداروں کی کارکردگی کا جائزہ لیا تھا۔وہ ٹرانسپورٹ کا جائزہ لینے کی خاطر عام شہری بن کر ٹیکسیوں میں سفر بھی کرچکے ہیں۔شاہ عبداللہ کی جانب سے بھیس بدل کر خفیہ دوروں کے ڈر سے حکومتی اداروں میں ہمیشہ سے کھلبلی مچتی رہتی ہے۔ایسے ہی حکمران اپنی رعایا کی بہتری کے لیے سوچتے اور کچھ کرتے بھی نظر آتے ہیں اگر حکمرانوں اور رعایا کے درمیان فرق ہو تو وہاں مسائل جنم لیتے ہیں۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 20 ستمبر 2019

Share On Whatsapp