پاکستان کی معروف براڈ کاسٹر ثریا شہاب انتقال کر گئیں

ثریا شہاب کا انتقال طویل علالت کے بعد 75 برس کی عمر میں ہوا

اسلام آباد : : پاکستان کی معروف براڈ کاسٹر ثریا شہاب اسلام آباد میں انتقال کر گئیں۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان کی معروف براڈ کاسٹر ثریا شہاب کا اسلام آباد میں طویل علالت کے بعد 75 برس کی عمر میں انتقال ہوگیا۔ ثریا شہاب کچھ سالوں سے الزائمر کا شکار تھیں، جمعے کی صبح انہوں نے پیٹ میں درد کی شکایت کی جس کے بعد ان کا بیٹا انہیں ایک نجی اسپتال لے جانے لگا تاہم پہنچنے سے قبل ہی انہوں نے دم توڑ دیا۔
جس کے بعد انہیں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے مقامی قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا۔ ان کے جنازے میں بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی، ان کے لواحقین میں دوبیٹے اور ایک بیٹی شامل ہیں۔ خیال رہے کہ ثریا شہاب کا شمار ملک کی ابتدائی نیوز کاسٹرز میں کیا جاتا ہے۔ انہوں نے صحافت اور پولیٹیکل سائنس میں ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی، جبکہ وہ پولیٹیکل سائنس میں پی ایچ ڈی بھی کررہی تھیں تاہم کینسر کی تشخیص کے بعد انہوں نے تعلیم ادھوری چھوڑ دی۔
انہوں نے اپنے براڈکاسٹنگ کیریئر کا آغاز 60 کے عشرے میں ریڈیو پاکستان کے ساتھ کیا تھا ، بعدازاں وہ ایران گئیں اور وہاں ریڈیو ''ایران زاہدان'' نام کا ایک شو کیا جو ان کی کامیابی کا سبب بنا۔ اس شو کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ سامعین گھنٹوں اس شو کے شروع ہونے کا انتظار کرتے تھے۔ 1973 میں وہ واپس پاکستان آئیں اور پھر سے ریڈیو پاکستان اور پی ٹی وی کا حصہ بن گئیں، جہاں وہ خبریں پڑھا کرتی تھی، بعدازاں 1980 میں وہ بی بی سی اردو سروس سے وابستہ ہوکر لندن منتقل ہوگئیں، 90 کی دہائی میں انہوں نے جرمن نشریاتی ادارے کے لیے بھی کام کیا۔
ان کے بیٹے نے بتایا کہ میری والدہ شاعری کی ایک کتاب پر بھی کام کر رہی تھیں۔ ثریا شہاب کے انتقال پر انڈسٹری بھی سوگوار رہی اور ٹی وی انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی کئی شخصیات نے ان کے انتقال پر نہ صرف گہرے دُکھ کا اظہار کیا بلکہ ان لے اہل خانہ سے اظہا تعزیت بھی کی۔

تاریخ اشاعت : ہفتہ 14 ستمبر 2019

Share On Whatsapp