کشمیر میں کرفیوکے خاتمے کیلئے اقدامات کیے جائیں، امریکی سینیٹرز نے ٹرمپ پر دباﺅ ڈالنا شروع کر دیا

ٹرمپ مقبوضہ کشمیر سے کرفیوہٹانے کیلئے مودی پر دباﺅ ڈالیں: امریکی سینیٹرز کا ٹرمپ سے ایکشن لینے کا مطالبہ

واشنگٹن : امریکی سینیٹرز نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ پر دباﺅ ڈالنا شروع کر دیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیوکے خاتمے کیلئے اقدامات کیے جائیں۔ امریکی سینیٹرز کا ٹرمپ سے ایکشن لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹرمپ مقبوضہ کشمیر سے کرفیو ہٹانے کیلئے مودی پر دباﺅ ڈالیں۔ چار امریکی سینیٹرز وین ہولن، لنزےگراہم، ٹوڈیونگ اوربین کارڈن نے ڈونلڈ ٹرمپ کے نام اپنے ایک خط میں کہا ہے کہ امریکی مداخلت سے کشمیریوں کوریلیف مل سکتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہر گزرتے دن کے ساتھ مقبوضہ کشمیر میں صورتحال مشکل ہوتی جارہی ہے، ڈانلڈ ٹرمپ مقبوضہ کشمیر میں انسانی بحران کے خاتمے کیلئے کردار ادا کریں ۔انہوں نے امریکی صدر سے مطالبہ کیا کہ صدر ٹرمپ مقبوضہ کشمیر میں مواصلاتی نظام کی بحالی کیلئے مودی سے ملاقات کریں اور اس سے جموں وکشمیر سے کرفیو اور لاک ڈاﺅ ن کے خاتمے کا کہیں۔
دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کے دورہ امریکا کے شیڈول کو حتمی شکل دے دی گئی ہے، اس مرتبہ عمران خان کا دورہ کچھ مختلف ہوگا، ٹرمپ سے ایک سے زائد ملاقاتیں کی جائیں گی، جنرل اسمبلی اجلاس کےدوران وزیراعظم اہم ممالک کےسربراہوں سے بھی ملاقاتیں کرینگے۔ وزیراعظم کے دورے کے شیڈول کی تفصیلات بھی جاری کر دی گئی ہیں۔ وزیراعظم ہاوس ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان دورہ امریکا کے سلسلے میں 21ستمبر کو نیویارک پہنچیں گے۔
امریکا کے دورے کے دوران وزیراعظم عمران خان کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے دو ملاقاتیں ہوں گی۔ وزیراعظم عمران خان کی امریکی صدر سے ایک ملاقات ظہرانے پر جبکہ دوسری ہائی ٹی پر ہوگی۔دورہ امریکا کے دوران وزیراعظم عمران خان 27 ستمبر کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کریں گے۔ جنرل اسمبلی اجلاس کے دوران وزیراعظم اہم ممالک کے سربراہوں سے بھی ملاقاتیں کرینگے۔
وزیراعظم عمران خان کا یہ دورہ امریکا کشمیر کی موجودہ کشیدہ و تشویش ناک صورتحال کے تناظر میں زیادہ اہمیت اختیار کر چکا ہے۔ یہاں یہ بات بھی واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس سے نریندر مودی کے خطاب کے بعد خطاب کریں گے۔ توقع ہے کہ وزیراعظم عمران خان اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے دوران بھارتی وزیراعظم نریندر مودی اور ان کے دہشت گردانہ اقدامات کو بھرپور انداز میں آڑے ہاتھوں لیں گے۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 12 ستمبر 2019

Share On Whatsapp