لندن پولیس نے بانی ایم کیو ایم الطاف حسین کے تقاریر کرنے اور گھر سے باہر نکلنے پر پابندی عائد کردی

جمعرات کے روز پوچھ گچھ کرنے کے بعد الطاف حسین کی ضمانت میں ایک ماہ کی توسیع کر دی گئی تاہم ان کے خلاف کے خلاف تحقیقات جاری رہیں گی

لندن : لندن پولیس نے بانی ایم کیو ایم کے تقاریر کرنے اور گھر سے نکلنے پر پابندی عائد کردی، جمعرات کے روز پوچھ گچھ کرنے کے بعد الطاف حسین کی ضمانت میں ایک ماہ کی توسیع کر دی گئی تاہم ان کے خلاف کے خلاف تحقیقات جاری رہیں گی۔ تفصیلات کے مطابق لندن پولیس نے بانی متحدہ قومی مومنٹ الطاف حسین کی ضمانت میں دوسری بار ایک ماہ توسیع کر دی ہے۔نفرت انگیز تقاریر کے الزام میں لندن پولیس نے الطاف حسین کو جمعرات پھر پوچھ گچھ کے لیے طلب کیا تھا۔
جس پر بانی ایم کیو ایم انٹرویو دینے وسطی لندن کے پولیس اسٹیشن پہنچے۔لندن پولیس کے مطابق پوچھ گچھ کے بعد الطاف حسین کی ضمانت میں ایک ماہ کی توسیع کر دی گئی تاہم ان کے خلاف کے خلاف تحقیقات جاری رہیں گی۔ جبکہ لندن پولیس نے الطاف حسین کیخلاف پابندیاں بھی مزید سخت کر دی ہیں۔ لندن پولیس نے الطاف حسین کے شام سے صبح تک گھر سے باہر نکلنے پر پابندی عائد کی ہے۔
جبکہ الطاف حسین آئندہ سے کسی قسم کی تقاریر بھی نہیں کر سکیں گے۔ یاد رہے کہ بانی ایم کیو ایم کو نفرت انگیز تقریر کرنے کے جرم میں رواں برس 11 جون کو گرفتار کیا گیا تھا۔بانی ایم کیو ایم کو میٹ پولیس کے کاؤنٹر ٹیررازم کمانڈ کے افسران نے گرفتار کیا تھا اور انہوں نے گرفتاری کے بعد ایک رات حوالات میں گزاری تھی۔گرفتاری کے وقت پولیس افسران نے الطاف حسین کی رہائش گاہ کی تلاشی بھی لی تھی۔گرفتاری کے بعد بانی ایم کیو ایم کو جولائی میں ایک مرتبہ ضمانت میں توسیع مل چکی ہے۔بانی ایم کیو ایم کے خلاف اگست 2016 میں نفرت انگیز تقریر کے الزام میں تحقیقات کا آغاز ہوا تھا۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 12 ستمبر 2019

Share On Whatsapp