آرٹیکل 149گورنر راج کے نفاذ کی بات نہیں کرتا: فروغ نسیم

وفاقی حکومت صوبائی حکومت کو 149(4)کی ڈائریکشن دے سکتی ہے، کراچی کوالگ صوبہ بنانے کی بات نہیں کی اور ناہی کراچی کو الگ ایڈ منسٹریٹو یونٹ بنانے کی بات کی ہے: وفاقی وزیر قانون

کراچی : وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے آرٹیکل 149 کی وضاحت کرتے ہوئے سابق گورنر سندھ محمد زبیر عمر کے دعوے کو غلط قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ آرٹیکل 149 گورنر راج کے نفاذ کی بات نہیں کرتا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت صوبائی حکومت کو 149(4)کی ڈائریکشن دے سکتی ہے، کراچی کوالگ صوبہ بنانے کی بات نہیں کی اور ناہی کراچی کو الگ ایڈ منسٹریٹو یونٹ بنانے کی بات کی ہے۔
خیال رہے کہ آج پاکستان مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء اورسابق گورنرسندھ محمد زبیر نے کہا تھا کہ سندھ کی تقسیم کی بات سب سے خطرناک ہے، پہلی مرتبہ کسی وفاق حکومت نے آرٹیکل 149کی بات کی،یہ وہ حملہ ہے جو کراچیکوسندھ سے الگ کردے گا،پی ٹی آئی تقسیم کے علاوہ کیا چاہتی ہے،ن لیگ سندھ میں آرٹیکل 149کے نفاذ کی مخالفت کرے گی۔ انہوں نے کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ کراچی میں کچرے کی سیاست ہور ہی ہے، ایک علاقے سے کچرا اٹھا کر دوسرے علاقے میں ڈمپ کیا جارہا ہے۔
محمد زبیر نے کہاکہ اگر آرٹیکل 149لگا دیا گیا تووفاق کا ڈھانچہ کمزور ہوجائے گا۔ دوسری جانب پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹوزرداری نےبھی کہا کہ بنگلا دیش کےبعد سندھو دیس اور سرائیکی دیس بھی بن سکتا ہے، عمران خان کی حکومت کو گھر جانا چاہیے، عمران خان کی جمہوریت کا جنازہ نکال دیا ہے، ہم خون دیں گے، سر دیں گے لیکن پاکستان پر آنچ نہیں آنے دیں گے۔انہوں نے آج یہاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ظلم ایک حد تک برداشت ہوتا ہے۔اب وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے وضاحت کی ہے کہ آرٹیکل 149 گورنر راج کے نفاذ کی بات نہیں کرتا ہے۔ یہ آرٹیکل وفاقی حکومت کو اختیار دیتا ہے کہ وہ صوبائی حکومت کو کوئی بھی ہدایت دے سکتی ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 12 ستمبر 2019

Share On Whatsapp