پریکٹیکل کے نمبروں میں رد و بدل کے باعث فیاض الحسن چوہان کے صاحبزادے کا ایف ایس سی کا نتیجہ روک لیا گیا

بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن راولپنڈی نے فزکس کے پریکٹیکل کے نمبروں میں رد و بدل کے باعث صوبائی وزیر کے بیٹے کا نتجہ روک لیا

راولپنڈی : پریکٹیکل کے نمبروں میں رد و بدل کے باعث فیاض الحسن چوہان کے صاحبزادے کا ایف ایس سی کا نتیجہ روک لیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن راولپنڈی نے فزکس کے پریکٹیکل کے نمبروں میں رد و بدل کے باعث صوبائی وزیر کے بیٹے کا نتجہ روک لیا ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ راولپنڈی بورڈ نے صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان کے بیٹے کا انٹرمیڈیٹ ایف ایس سی کا نتیجہ روک لیا ہے، بتایا گیا ہے کہ فیاض الحسن چوہان کے بیٹے فہد حسن کے فزکس کے پریکٹیکل کے نمبر تبدیل کیے گئے تھے جس کے باعث نتیجہ روکا گیا۔
بورڈ انتظامیہ کے مطابق چیئرمین بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن راولپنڈی کے احکامات پر کنٹرولر امتحانات نے 2 رکنی تحقیقاتی کمیٹی قائم کردی ہے۔چیئرمین راولپنڈی بورڈ نے کہا ہے کہ فزکس کے پریکٹیکل 17 جولائی کو ختم ہوئے تھے جبکہ انہوں نے چارج 18 جولائی کو سنبھالا تھا اور پھر انہوں نے نتائج میں ردو بدل کا معاملہ نوٹس میں آتے ہی تحقیقات کا حکم دے دیا۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ ان تحقیقات کا آغاز کنٹرولر امتحانات کی جانب سے چیئرمین بورڈ کو خط لکھے جانے کے بعد ہوا۔ بتایا گیا ہے کہکنٹرولر امتحانات نے چیئرمین بورڈ آف انٹرمیڈیٹ راولپنڈی کو لکھے گئے اپنے خط میں بتایا تھا کہ صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان کے صاحبزادے فہدحسن کے فزکس کے پریکٹیکل میں پہلے14 نمبر تھے لیکن بعد میں انہیں تبدیل کرکے 30 کیا گیا اور پھر امیدوار فہد حسن کے فزکس پریکٹیکل کے نمبروں میں رد و بدل پر نتیجہ روکا گیا۔
چیئرمین راولپنڈی بورڈ نے بتایا ہے کہ انہوں نے اپنے بیٹے کے پریکٹیکل کے نمبروں میں تبدیلی پر انکوائری کی درخواست دی ہے ۔ فیاض الحسن چوہان نے درخواست میں موقف اپنایا کہ بیٹے کے پریکٹیکل کے نمبرز کی تبدیلی میں ان کا کوئی ہاتھ نہیں ہے اور جو بھی اس کا ذمہ دار ہے اس کے خلاف انکوائری کی جائے۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 12 ستمبر 2019

Share On Whatsapp