دنیا بھر میں فلسطین میں شرح خواندگی سب سے زیادہ ہے،یونیسکو

سال 2018 تک 15 سال یا اس سے زیادہ عمر کے تقریبا 83000 افراد ناخواندہ ہیں،رپورٹ

رام اللہ : فلسطین کے مرکزی ادارہ شماریات نے کہاہے کہ دنیا بھر میں سب سے کم ناخواندگی کی شرح فلسطین میں ریکارڈ کی گئی ہے۔ سال 2018 میں 15 سال یا اس سے زیادہ عمر کے تقریبا 83000 افراد ناخواندہ ہیں۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یونیسکو نے بتایاکہ عالمی یوم خواندگی کے موقع پر ایک رپورٹ میں بتایا کہ ناخواندہ شخص وہ شخص ہے جو اپنی روزمرہ کی زندگی کے بارے میں ایک سادہ سا جملہ نہیں لکھ سکتا۔
ہر سال 8 ستمبر کو عالمی یوم خواندگی کا دن منایا جاتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق فلسطین میں ناخواندگی کی شرح دنیا میں سب سے کم ہے۔یونیسکو انسٹی ٹیوٹ برائے شماریات کے مطابق 2016 میں عرب ممالک میں 15 سال یا اس سے زیادہ عمر کے افراد میں ناخواندگی کی شرح 24.8 فی صد تھی۔رپورٹ کے اسی سال عرب دنیا میں ان پڑھ افراد کی تعداد 64.6 ملین تھی، ان میں سی.9.9 ملین خواتین ہیں۔
اعداد و شمار نے 1997 کے بعد سے ناخواندگی کی شرح میں نمایاں کمی کا اشارہ کیا ہے 1997 میں یہ 13.9 فیصد تک پہنچ گئی اور 2018 میں یہ 2.8 فیصد تک پہنچ گئی۔مردوں میں شرح 1997 میں ناخواندگی کی 7.8 فی صد سے تھی جو کم ہوکر 2018 میں 1.3 فی صد ہوگئی ، اور خواتین کے درمیان اسی عرصے میں یہ 20.3 فیصد سے کم ہوکر 4.3 فیصد ہوگئی۔مغربی کنارے میں ، شرح 1997 میں 14.1 سے کم ہوکر 2018 میں 3.0 ہوگئی ، اور غزہ کی پٹی میں اسی مدت کے لئے یہ 13.7 فیصد سے کم ہوکر 2.4رہ گئی۔فلسطین میں ناخواندگی کی شرح 2018 میں 2.8 (82.8 ہزار ان پڑھ اور ناخواندہ) تھی ، مردوں میں 1.3 (20.2 ہزار ناخواندہ62.6 ہزار ان پڑھ) میں 4.3 تھی۔

تاریخ اشاعت : پیر 9 ستمبر 2019

Share On Whatsapp