Murder Of Crows Has Attacked Man For Three Years After One Of Their Young Died In His Hands

اپنے ساتھی کی ہلاکت کا انتقام لینے کے لیے کوئے تین سالوں سے مبینہ قاتل نوجوان پر حملے کر رہے ہیں


Warning: call_user_func_array() expects parameter 1 to be a valid callback, function 'show_embed_live_video' not found or invalid function name in /home/urduquick/public_html/functions.php on line 87
بھارتی ریاست مدھیا پردیش  کے ایک نوجوان کی زندگی تین سالوں سے الفرڈ ہچکاک کی فلم برڈز  کی طرح گزر رہی ہے۔وہ نوجوان جیسے ہی گھر سے باہر نکلتے ہیں، بہت سے کوے اُن پر حملہ کر دیتے ہیں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ کوے صرف اُن پر ہی حملہ کرتے ہیں، کسی اور شخص کو نشانہ نہیں بناتے۔
شیوا کیوات کا تعلق سومیلا گاؤں سے ہے۔وہ یومیہ مزدوری پر کام کرتے ہیں۔
اُن کا کہناہے کہ اُن کی مشکلا ت کا آغاز تین سال پہلے ایک غلط فہمی کی وجہ سےہوا۔  ایک دن وہ گھر سے باہر نکلے تو انہوں نے کوے کے بچے کو لوہے کے جال میں پھنسا دیکھا۔ شیوا  نے کوے کےبچے کو جال سے نکال کر بچانے کی کوشش کی لیکن وہ بچہ اُنکے ہاتھوں میں مر گیا۔ موقع پر موجود کچھ کوؤں نےیہ منظر دیکھ لیا۔ کوے سمجھے کہ شیوا نے ہی اُن کے ساتھی کو قتل کیا ہے۔
اس کے بعد تو کوے شیوا کے دشمن ہو گئے۔ کبھی کوے گروپوں کی صورت میں ایک ساتھ اُن پر حملہ کرتے ہیں اور کبھی اکیلے ہی وار کرتے ہیں۔ شیوا گھر سے باہر نکلتے ہوئے اپنے ساتھ ایک چھڑی رکھتے ہیں، تاکہ کوؤں کی چونچ اور پنجوں سے بچ سکیں۔
شیوا  کے ایک ہمسائے کا کہنا ہے کہ کوے ان  پر ایسے حملہ کرتے ہیں، جیسے فلموں میں جیٹ طیارے حملہ کرتےہیں۔  برکت اللہ یونیورسٹی ،بھوپال   میں پرندوں کے برتاؤ کامطالعہ کرنے والے پروفیسر اشوک کمار منجل  کا کہنا ہے کہ کوؤں کی یادداشت بہت تیز ہوتی ہے۔ اُن کا انتقام لینے کا طریقہ کچھ زیادہ پیچیدہ نہیں ہوتا۔ وہ اکیلے یا گروپوں میں حملے کرتےہیں۔

تاریخ اشاعت : ہفتہ 7 ستمبر 2019

Share On Whatsapp
سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں