Robot Pole Dancers To Debut At French Nightclub

اب فرانس کے نائٹ کلب میں روبوٹ پول ڈانسر ڈانس کریں گے

روبوٹس اور مصنوعی ذہانت انسانی ملازمتوں کے لیے خطرہ بن گئے ہیں۔ حد تو یہ ہے کہ اب  اس سے پول ڈانسر کی ملازمت بھی خطرے میں پڑ گئی ہے۔
فرانسیسی شہر نانت میں  اب روبوٹ پول ڈانسنگ کریں گے۔ یہ پول ڈانسر روبوٹ اونچی  ایڑی کے جوتے پہنے ہونگے اور ان کے سر پر سی سی ٹی وی کیمرے لگے ہونگے۔ اگلے ہفتے نانت شہر کے ایس سی کلب کے قیام کے پچاس سال مکمل ہونے پر ان پول ڈانسر روبوٹ کو باقاعدہ طور پر پیش کر دیا جائے گا
پول ڈانسر روبوٹس کا خیال برطانوی آرٹسٹ گیلس واکر سے پیش کیا تھا۔

انہوں نے ان روبوٹس کے دھات کے جسمانی اعضا کو پلاسٹک مینکیوئن سے بدل دیا تھا۔
اس نائٹ کلب کے مالک کا کہنا ہے کہ کلب میں دو نئے روبوٹس کی شمولیت کے باوجود اس وقت کلب میں کام کرنے والے 10 انسانی ڈانسرز کو ملازمت سے نہیں نکالا جائے گا۔ ان روبوٹس کا متعارف کرانے کا مقصد صرف ٹیکنالوجی کو سراہنا ہے۔

تاریخ اشاعت : پیر 2 ستمبر 2019

Share On Whatsapp
سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں