مظفر آباد میں صحت سہولت پروگرام کا افتتاح

صحت سہولت پروگرام کے تحت مظفرآباد میں 3 لاکھ غریب خاندان مفت علاج سے مستفید ہوں گے، حکومت نے فلاحی ریاست کی جانب ایک اور سنگ میل عبور کر لیا، ڈاکٹر ظفر مرزا

اسلام آباد : وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا ہے کہ صحت سہولت پروگرام کے تحت مظفرآباد آزاد جموں کشمیر میں غربت کی لکیر سے نیچے زندگی بسر کرنے والے 3 لاکھ خاندان مفت علاج سے مستفید ہوں گے۔ تحریک انصاف کی حکومت نے فلاحی ریاست کی جانب ایک اور سنگ میل عبور کیا ہے ۔ یہ بات انہوں نے پیر کو مظفر آباد آزاد جموں کشمیر میں صحت سہولت پروگرام کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ وزیراعظم کے وژن کے مطابق یونیورسل ہیلتھ کوریج کی رسائی عوام تک یقینی بنانے رہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان پسماندہ اور غریب عوام کا درد رکھتے ہیں۔ تحریک انصاف کی حکومت تاریخ میں پہلی بار وسائل انسانوں پر خرچ کر رہی ہے، حکومت صحت کی شعبے میں کئے گئے وعدوں کی تکمیل کے لئے پرعزم ہے۔ گزشتہ 70 سال میں صحت کے شعبے کو نظرانداز کیا گیا ، حکومت کو زندگی کے ہر طبقے کا احساس ہے ، صحت کے شعبے میں وہ انقلابی تبدیلیاں لا رہے ہیں جس کا عوام سے وعدہ کیا تھا۔
صحت کی بنیادی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنانا ریاست کی زمہ داری ہے، صحت انصاف کارڈ غریب اور نادار عوام کیلئے کسی نعمت سے کم نہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے اس انقلابی اقدام سے اب علاج کے لئے کسی غریب کو گھر کے برتن نہیں بیچنے پڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے 48 اضلاع میں یہ پروگرام کامیابی سے جاری ہے، صحت سہولت پروگرام کا دائرہ کار پورے ملک تک پھیلا دیا ہے۔
اس پروگرام کے تحت خصوصی افراد اور غربت کی لکیر سے نیچے بسنے والے افراد اپنی مرضی کے پینل پر موجود ہسپتال میں اپنا علاج مفت کروا سکیں گے۔ معاشی نظام کی طرح صحت کا خستہ حال نظام ہماری حکومت کو ورثہ میں ملا ہے، صحت کے شعبے میں اصلاحات کا مر بوط نظام لا رہے ہیں اس نظام میں پرائمری ہیلتھ کیئر کو مضبوط کیا جا رہا ہے۔ ڈاکٹر ظفر مرزا نے مزیز کہا کہ امیر اور صاحب استطاعت آدمی اپنے پیسے کے بل بوتے پر اپنا علاج اپنی مرضی کے ڈاکٹر اور ہسپتال سے کروا لیتا ہے مگر غریب آدمی کو اپنے علاج کے لئے گھر کے برتن تک بیچنے پڑتے ہیں، حکومت کا صحت سہولت پروگرام غریب کے لئے ایک وسیلہ ثابت ہوا ہے اور غریب آدمی کی زندگی میں ایک روشنی کی کرن ہے۔
جب غریب کے گرد مایوسی کے بادل چھا جاتے ہیں تو ایسے پروگرام رحمت بن کر سُکھ کی بارش برساتے ہیں اور نا امیدی کے بادل چھٹ جاتے ہیں، ایسے میں غریب کی دعا یقیناً عرش معلی تک پہنچتی ہے۔ صحت سہولت پروگرام سماجی تحفظ کے اس اقدام کے ذریعے خط غربت سے نیچے زندگی گزارنے والے غریب خاندانوں کو صحت کی انشورنس دی جا رہی ہے۔ ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ صحت انصاف کارڈ رکھنے والوں کو علاج معالجہ کی جو خدمات حاصل ہیں، ان میں آپریشنز، سٹنٹس ڈلوانا، کینسر کا علاج، نیورو سرجیکل آپریشنز، جلے کا علاج، حادثہ کے زخم، گردوں کی صفائی، ڈلیوریز، بڑے آپریشنز اور دیگر سرجیکل آپریشنز وغیرہ شامل ہیں۔
یہ کارڈ رکھنے والوں کو ہسپتال سے ڈسچارج کئے جانے کے وقت1000روپے ٹرانسپورٹیشن چارجز کی مد میں ادا کئے جائیں گے جبکہ خدانخواستہ ہسپتال میں وفات پا جانے کی صورت میں تجہیزو تکفین کے لئی10,000روپے لواحقین/ ورثا کو دیئے جائیں گے جبکہ پاکستان بھر کے تمام ہسپتالوں میں علاج معالجہ کے لئے بین الصوبائی طور پر تبادلہ کی سہولت بھی حاصل ہوگی۔ اس سکیم سے علاج معالجہ کی سہولتوں میں تیزی سے بہتری آئے گی اور معاشرہ کے پسے ہوئے اور غریب افراد کو علاج معالجہ کی معیاری سہولیات میسر آئیں گی۔

تاریخ اشاعت : پیر 26 اگست 2019

Share On Whatsapp