لڑکی نے نئے بوائے فرینڈ کے ساتھ مل کر پرانے عاشق کو قتل کردیا

مقتول نے شادی کا وعدہ پورا نہیں کیا اس لیے نئے آشنا کے ساتھ مل کر اس کو قتل کرنے کی واردات کی

کراچی : کراچی میں ہونے والے اندھے قتل کا معمہ حل ہو گیا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ ایس ایس پی ملیر عرفان بہادر کا کہنا ہے کہ ملیر کینٹ پولیس نے گذشتہ روز ملنے والی لاش کا معمہ ایک دن میں حل کر لیا ہے۔پولیس نے کیس کی تفتیش میں تکنیکی سہولیات کا سہارا لیا۔گذشتہ روز گلشن رومی سے جواد نامی شخص کی لاش برآمد ہوئی تھی۔پولیس نے لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے حوالے کیا اور بعدازاں تفتیش شروع کر دی۔
حراست میں لی گئی ملزمہ نے اعترافی بیان میں بتایا کہ مقتول نے اس سے شادی کاوعدہ کیا تھا،مقتول کے شادی سے انکار پر ملزمہ نے بدلہ لینے کے لیے اپنے نئے عاشق کے ساتھ مل کر واردات کی۔پولیس نے تاحال ملزمہ کی شناخت ظاہر نہیں کی۔تاہم زیر حراست ملزمہ کے بیان کے مطابق قتل کی اس واردات کی منصوبہ بندی اور عمل درآمد میں اس کا آشنا بھی شامل ہے۔
پولیس نے ملزمہ کے زیر استعمال گاڑی جس میں قتل کی واردات کی گئی،وہ بھی تحویل میں لے لی ہے۔پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ گرفتار ملزمہ کا ساتھی فرار ہے۔جس کی تلاش جاری ہے۔انٹیلی جنس بنیادوں پر چھاپے بھی مارے جا رہے ہیں۔پولیس نے ضابطے کی کاروائی کا آغاز کر دیا ہے۔اس سے قبل 2017ء میں بھی ایک ایسا ہی واقعہ پیش آیا تھا جب کراچی میں ایک لڑکی نے اپنے نئے آشنا سے مل کر اپنے پُرانے محبوب کو قتل کر دیا تھا۔
بتایا گیا کہ ہ 29 جولائی 2017ء کو نارتھ کراچی سے 20 سالہ عمران کی لاش پھندا لگی ملی تھی۔ ابتدائی طور پر پولیس نے اس واقعہ کو خود کُشی کا شاخسانہ قرار دیا لیکن بعدازاں تفتیش میں یہ بات سامنے آئی کہ عمران کو اس کی محبوبہ نے اپنی والدہ اور نئے آشنا کے ساتھ مل کر موت کے گھاٹ اُتارا۔ پولیس کا کہنا تھا کہ عمران کی لاش پھندے پر لٹکا کر اس واقعہ کو خود کُشی کا رنگ دینے کی کوشش کی گئی۔ پولیس نے بتایا کہ مقتول عمران کچھ دیر قبل ہی جیل سے چھُوٹ کر آیا تھا ۔ پولیس کے مطابق ملزمان نے تفتیش کے دوران اعتراف جُرم کیا۔

تاریخ اشاعت : ہفتہ 24 اگست 2019

Share On Whatsapp