پاک افغان ٹریک ٹو پراجیکٹ سے وابستہ اعلیٰ سطحی افغان وفد کی شاہ محمود قریشی سے ملاقات ، پاک افغان تعلقات پر تبادلہ خیال

, پاکستان افغانستان کی داخلی خود مختاری کا احترام کرتا ہے اور افغانستان میں امن و استحکام کا خواہاں ہے ، شاہ محمود قریشی , چینی اور افغان وزرائے خارجہ کو سہ فریقی کانفرنس میں شرکت کیلئے دعوت نامے ارسال کئے ہیں جو جلد اسلام آباد میں منعقد ہو گی ، گفتگو

اسلام آباد : پاک افغان ٹریک ٹو پراجیکٹ سے وابستہ اعلیٰ سطحی افغان وفد نے ڈاکٹر شعیب سڈل کی قیادت میں وزارت خارجہ میں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی جس میں پاک افغان دو طرفہ تعلقات، افغان امن عمل سمیت مختلف باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ وزیر خارجہ نے کہاکہ پاکستان اور افغانستان کے مابین تاریخی ،ثقافتی ،مذہبی دیرینہ تعلقات ہیں ۔
مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاکہ بدقسمتی سے ہمارے دو طرفہ تعلقات باہمی اعتماد کے فقدان کے سبب سردمہری کا شکار رہے ۔مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاکہ 27 جون کو صدر اشرف غنی کے دورہ پاکستان سے ان تعلقات کو ایک نء جہت ملی ہم نے دو طرفہ تجارتی تعاون کے فروغ پر بات چیت کی ۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان افغانستان کی داخلی خود مختاری کا احترام کرتا ہے ۔
انہوںنے کہاکہ پاکستان افغانستان میں امن و استحکام کا خواہاں ہے کیونکہ افغانستان کا امن پورے خطے کی تعمیر و ترقی کے لیے ناگزیر ہے ۔انہوںنے کہاکہ ہم نے خلوصِ دل سے افغان امن عمل میں اپنا مصالحانہ کردار ادا کیا اور انشاء اللہ کرتے رہیں گے ۔انہوںنے کہاکہ بھوربن میں افغانستان کے صف اول کے قائدین سے میری ملاقات اور تفصیلی گفتگو ہوئی ۔
انہوںنے کہاکہ گزشتہ روز میں نے چینی اور افغان وزرائے خارجہ کو سہ فریقی کانفرنس میں شرکت کیلئے دعوت نامے ارسال کئے ہیں جو جلد اسلام آباد میں منعقد ہو گی ۔ڈاکٹر شعیب سڈل نے وزیر خارجہ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ پاک افغان ٹریک ٹو پروجیکٹ کا آغاز 2015 میں ہوا اور اس پراجیکٹ کا مقصد پاک افغان ، تجارتی ، سیاسی اور ثقافتی تعلقات کا فروغ ہے اور یہ اس سلسلے کی سترویں میٹنگ ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 22 اگست 2019

Share On Whatsapp