ڈیم فنڈ کی رقم سے متعلق خاتون صحافی کا دعویٰ غلط ، غلطی کا اعتراف بھی کر لیا گیا

نجی ٹی وی چینل نے خاتون صحافی کی غلطی پر وضاحت پیش کر دی


Warning: call_user_func_array() expects parameter 1 to be a valid callback, function 'show_embed_live_video' not found or invalid function name in /home/urduquick/public_html/functions.php on line 87
اسلام آباد : : ڈیم فنڈ میں موجود رقم سے متعلق خاتون صحافی کا دعویٰ غلط نکلا ۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل پر پروگرام میں ڈیم فنڈ کا حکومت کی جانب سے یوٹیلیٹی بلز کی ادائیگی کے لیے استعمال کیے جانے کا دعویٰ کرنے والی خاتون صحافی عائشہ بخش نے اپنی غلطی کا اعتراف کر لیا جبکہ ادارے کی جانب سے بھی اس پر وضاحت پیش کی گئی۔ ادارے کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ ڈیم فنڈ میں جمع ہونے والی رقم دوسرے اخراجات کی مد میں استعمال ہونے کی خبریں بے بنیاد ہیں۔
ڈیم فنڈ میں جمع کی گئی پوری کی پوری رقم اسٹیٹ بینک آف پاکستان میں موجود ہے۔ ڈیم فنڈ میں جمع ہونے والی رقم کی سرمایہ کاری نیشنل بینک کے ذریعے کی گئی۔ نیشنل بینک کی جانب سے ڈیم فنڈ کی رقم کی سرمایہ کاری مارکیٹ ٹریژری بلز میں کی گئی ہے۔ ڈیم فنڈ سرمایہ کاری سے حاصل منافع بھی اسی میں جمع ہوتا رہے گا۔منافع کے باعث ڈیم فنڈ کی رقم میں مسلسل اضافہ ہوتا رہے گا۔
ادارے کی جانب سے وضاحت جاری ہونے پر خاتون صحافی عائشہ بخش نے مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ پروگرام میں ڈیم فنڈ کے حوالے سے دی جانے والی خبر ایک تحقیقی غلطی تھی جس کی چینل نے بعد ازاں وضاحت کر دی تھی۔
خیال رہے کہ اس سے قبل خاتون صحافی نے دعویٰ کرتے ہوئے بتایا تھا کہ میں نے اسلام آباد سے پتہ کروایا کہ کیا ابھی بھی ڈیم فنڈ میں پیسہ جمع ہو رہا ہے یا نہیں؟ تو مجھے بتایا گیا کہ اب شہری ڈیم فنڈ میں رقم جمع نہیں کروا رہے۔
لیکن جو ڈیم فنڈ میں اربوں روپیہ اکٹھا ہوا تھا وہ یوٹیلیٹی بلز کے نام پر حکومت خرچ کر چکی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت نے ڈیم فنڈ میں اکٹھا ہونے والا پیسہ کمرشل بینک میں رکھا تھا وہ حکومت نے بلز کے نام پر استعمال کر لیا ۔ انہوں نے مزید کیا کہا تھا آپ بھی دیکھیں:

تاریخ اشاعت : جمعرات 22 اگست 2019

Share On Whatsapp