چین کی جانب سے امریکی روئی کی درآمدمکمل طور پر معطل کرنے کے فیصلے کے باعث پاکستان میں روئی کی قیمتوں میں زبردست تیزی کا رجحان

کراچی : چین کی جانب سے امریکی روئی کی درآمدمکمل طور پر معطل کرنے کے فیصلے کے باعث پاکستان میں روئی کی قیمتوں میں زبردست تیزی کا رجحان۔چیئرمین کاٹن جنرز فورم احسان الحق نے بتایا کہ عید سے قبل روئی کی ترسیل نہ ہونے کے باوجود ٹیکسٹائل ملز نے معیاری روئی کی بڑے پیمانے پر خریداری کی جس کے باعث روئی کی قیمتوں میں200 روپے فی من کا اضافہ دیکھا گیا اور توقع ظاہر کی جا رہی ہے کہ آئندہ چند روز کے دوران روئی کی قیمتوں میں مزید اضافہ سامنے آئے گا۔
انہوں نے بتایا کہ چین امریکی روئی کا دنیا بھر میں سب سے بڑا خریدار تھا جو امریکہ سے سالانہ 35سی40لاکھ بیلز(480پاؤنڈ( روئی کی بیلز خریدتا تھا لیکن چند روز قبل امریکہ کی جانب سے چینی اشیاء پر مزید دس فیصدڈیوٹی کے نفاذ کے بعد چین نے روئی سمیت تمام امرکی زرعی اجناس اور مصنوعات کی امریکہ سے براہ راست یا براستہ درآمد پر مکمل پابندی کا فیصلہ کیا تھا اور توقع ظاہر کی جا رہی ہے کہ چین اب اپنی ضروریات پورا کرنے کے لئے روان سال پاکستان سے بڑے پیمانے پر روئی کی خریداری کرے گاجس سے پاکستان میں روئی کی قیمتوں میں مسلسل تیزی کے امکانات ظاہر کئے جا رہے ہیں ۔
انہوں نے مزید بتایا کہ پاکستان کے بیشتر کاٹن زونز میں ہونے والی مسلسل بارشوںکے باعث چند شہروں میں کپاس کی فصل متاثر ہوئی ہے جس کے باعث بھی معیاری روئی کی فراہمی متاثر ہونے سے اس کی قیمتوں میں تیزی کا رجحان سامنے آیا ہے۔

تاریخ اشاعت : بدھ 14 اگست 2019

Share On Whatsapp