آخر کار بھارت نے بھی مقبوضہ کشمیر میں احتجاج کیے جانے کا اعتراف کر لیا

کشمیریوں نے 9اگست کو کرفیو توڑ کر شدید احتجاج کیا جس کے بعد ان پہ آنسو گیس اور چھرے برسائے گئے: برطانوی نشریاتی ادارے کی خبر کے بعد بھارتی دفترِ خارجہ نے اعتراف کر لیا

نئی دہلی : آخر کار بھارت نے بھی مقبوضہ کشمیر میں احتجاج کیے جانے کا اعتراف کر لیا ہے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کی خبر کے بعد بھارتی دفترِ خارجہ نے اعتراف کر لیا ہے کہ کشمیریوں نے 9 اگست کو کرفیو توڑ کر شدید احتجاج کیا جس کے بعد ان پہ آنسو گیس اور چھرے برسائے گئے۔نہ نہ کرتے بلآخربھارتی حکومت نے سری نگر کے علاقے صورہ میں بھارت مخالف احتجاج ہونے کا اعتراف کرلیا۔
روزنامہ جنگ کے مطابق بھارتی وزارت داخلہ کے ترجمان نے سوشل میڈیا پر اعتراف کیا ہے کہ 9 اگست کو سری نگر کے علاقے صورہ میں آرٹیکل 370 ختم کرنے کے خلاف بھارت مخالف احتجاج کیا گیا تھا۔ سری نگر میں سخت ترین کرفیو کے باوجود ہونے والے اس احتجاجی مارچ کی خبر برطانوی نشریاتی ادارے کی جانب سے جاری کی تھی۔ رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا تھا کہ قابض بھارتی فورسز نے اس دن مظاہرین پرچھروں اور آنسو گیس کا استعمال بھی کیا تھا جس میں متعدد کشمیری زخمی بھی ہو گئے تھے۔
قابض بھارتی حکام نے اس سے قبل مقبوضہ کشمیر کے دارالحکومت سری نگر میں ایسے کسی بھی واقعے کے ہونے سے قطعی انکار کردیا تھا لیکن اب بھارتی وزارتِ خارجہ نے اس احتجاج کا اعتارف کر لیا ہے۔ دوسری جانب وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے بتایا ہے کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیرمیں اپنے اقدام سےنظر ہٹانے کیلئے آزادکشمیر میں ایکشن کا پروگرام بنا رکھا ہے لیکن پاکستانیفوج کو پتا ہے کہ بھارت نے آزاد کشمیر میں ایکشن لینے کا پروگرام بنایا ہوا ہے، نریندر مودیہم تیار ہیں جو کرو گے، ہم آخر تک جائیں گے، پاکستانی فوج اور قوم تیار ہے ، قوم فوج کے شانہ بشانہ لڑے گی۔

تاریخ اشاعت : بدھ 14 اگست 2019

Share On Whatsapp