سپریم کورٹ نے محکمہ صحت سے رضاکارانہ ریٹائر ڈاکٹر عظمی شاہین کی پنشن روکنے کیخلاف سماعت اگست کے تیسرے ہفتے کے لئے مقرر کردی

کراچی : سپریم کورٹ نے محکمہ صحت سے رضاکارانہ ریٹائر ڈاکٹر عظمی شاہین کی پنشن روکنے کیخلاف سماعت اگست کے تیسرے ہفتے کے لئے مقرر کردی۔ سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں جسٹس فیصل عرب اور جسٹس سجاد علیشاہ پر مشتمل 3 رکنی بینچ کے روبرو محکمہ صحت سے رضاکارانہ ریٹائر ڈاکٹر عظمی شاہین کی پینشن روکنے کیخلاف درخواست کی سماعت ہوئی۔
درخواستگزار کے وکیل نے موقف دیا کہ محکمہ صحت کی ملازمہ ڈاکٹر عظمی شاہین 22 برس سروس کرنے کے بعد رضاکارانہ رٹائر ہوئی۔ رضا کارانہ ریٹائرمنٹ پر اکائونٹنٹ جنرل آفس نے انکی پینشن روک دی۔ سیکریٹری صحت نے رپورٹ جمع کرادی۔ رپورٹ کے مطابق محکمہ ہیلتھ کے رولز کے مطابق رضاکارانہ ریٹائرمنٹ کا آپشن موجود ہے۔ رضا رکارنہ ریٹائرمنٹ پر پینشن دی جا سکتی ہے۔ عدالت نے ڈاکٹر عظمی شاہین کی درخواست پر ملک نعیم کو عدالتی معاون مقرر کردیا۔ عدالت نے سماعت اگست کے تیسرے ہفتے کے لئے مقرر کردی۔ دائر درخواست میں موقف اپنایا گیا تھا کہ اکائونٹنٹ جنرل کے آفیس نے 25 برس سے قبل ریٹائرمنٹ پر پینشن روکی تھی۔ سیکریٹری خزانہ سندھ نے بھی پینشن دینے پر اعتراض کیا تھا۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 8 اگست 2019

Share On Whatsapp