متحدہ عرب امارات میں بچوں کی ٹریفک حادثات میں اموات کا معاملہ

ٹریفک پولیس کی جانب سے والدین کو تازہ ترین وارننگ جاری

دُبئی : متحدہ عرب امارات میں گزشتہ کچھ عرصے کے دوران ایسے کئی ٹریفک حادثات پیش آئے ہیں جن میں بچوں کی اموات ہوئی ہیں۔ جس کے بعد پولیس کی جانب سے والدین کو وارننگ جاری کی گئی ہے کہ وہ اپنے بچوں کو پچھلی سیٹ پر بٹھاتے وقت بیلٹ ضرور باندھیں تاکہ کسی ناخوشگوار واقعہ کی صورت میں اُن کی جان کو خطرہ لاحق نہ ہو۔ گزشتہ روز بھی شیخ محمد بن زاید روڈ دو جبکہ شیخ زاید روڈ پربھی دو ٹریفک حادثات پیش آئے ہیں۔
پولیس کے مطابق پہلا ٹریفک حادثہ محمد بن زاید روڈ پر صبح سوا سات بجے الخوانیج کی ایگزٹ پر پیش آیا جس کے باعث شارجہ سے دُبئی جانے والی ٹریفک سُست روی کا شکار ہو گئی اور لوگ وقت پر اپنی منزل پر نہ پہنچ سکے۔ دُوسرا ٹریفک حادثہ پونے آٹھ بجے شیخ زاید روڈ پر صفا پُل پر ورلڈ ٹریڈ سنٹر کی جانب پیش آیا، اس حادثے نے بھی ٹریفک جام کی صُورتِ حال پیدا کر دی۔
اس کے آدھ گھنٹے بعد صفا پارک کے قریب بھی ایک ٹریفک حادثہ پیش آیا۔ جبکہ ایک اور حادثہ محمد بن زاید روڈ پردُبئی سے ابو ظہبی جانے والی سڑک پر دُبئی انویسمنٹ پارک کے قریب پیش آیا۔ جس کے بعد سڑک پر گاڑیوں کی لمبی لمبی قطاریں لگ گئیں۔ پولیس نے حادثات کی گنتی میں اضافے کے باعث بچوں کی حفاظت یقینی بنانے کے لیے والدین کو وارننگ جاری کی ہے کہ وہ گاڑی میں بیٹھتے وقت اس بات کی ضرور تسلّی کر لیں کہ تمام افراد نے اپنی سیٹ بیلٹ باندھ لی ہیں۔
بچوں کو گاڑی کی پچھلی سیٹ پر بٹھانا زیادہ محفوظ رہتا ہے۔ متحدہ عرب امارات کے ٹریفک قوانین کے مطابق دس سال سے کم عمر بچوں کو پچھلی سیٹ پر بٹھانا اور ساتھ میں بیلٹ بھی باندھنا محفوظ ترین رویہ ہے۔ اگر والدین بچوں کے حوالے سے اس ٹریفک قانون کی پابندی نہیں کرتے تو اُنہیں چار سو درہم کا جرمانہ کیا جاتا ہے اور اس کے ساتھ ساتھ اُن کے ڈرائیونگ لائسنس پر چار بلیک پوائنٹس کا اندراج بھی ہوتا ہے۔ جبکہ بچے کو کسی مسافر یا ڈرائیور کی گود میں بٹھانا بھی قانوناً جُرم سمجھا جاتا ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعرات 25 جولائی 2019

Share On Whatsapp