آئی ایم ایف نے نیو ورلڈ اکنامک آئوٹ لک رپورٹ جاری کردی

, بین الاقوامی مارکیٹ میں بے یقینی کے باعث عالمی معاشی شرح نمو میں کمی کی پیشن گوئی

نیویارک : عالمی مالیاتی اداری( آئی ایم ایف) نیورلڈ اکنامک آوٹ لک رپورٹ جاری کردی ،بین الاقوامی مارکیٹ میں بے یقینی کے باعث عالمی معاشی شرح نمو میں کمی کی پیشن گوئی کردی۔تفصیلات کے مطابق آئی ایم ایف کی جانب سے عالمی معیشت پرجاری کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ رواں سال عالمی معاشی شرح نموتین اعشاریہ دوفیصدرہے گی جو پہلے کی گئی پیشن گوئی سیکم ہے۔
آئی ایم ایف کیمطابق عالمی شرح نمومیں کمی کی وجہ تجارتی جنگ اوراس کو بڑھاو دینے والی پالسیاں ہیں۔آئی ایم ایف کی چیف اکنامسٹ گیتا گوپی ناتھ کاکہناتھاکہ شرح نمو میں کمی کی وجوہات خود ساختہ ہیں۔تجارتی جنگ اوربریگزیٹ کیحوالیسے موجود بے یقینی اب ختم ہونی چاہیئے۔رپورٹ کے مطابق عالمی معاشی شرح نمو3.2فیصدرہیگی اور اس کا سبب عالمی طاقتوں کی تجارتی جنگ کوبڑھاوہ دینیوالی پالیسیاں ہیں، شرح نمو میں کمی کی وجوہات بڑے ممالک کی خودساختہ ہیں۔
گیتا گوپی ناتھ کا یہ بھی کہنا تھا کہ عالمی تجارتی منظرنامے پر جاری یہ بییقینی اب ختم ہونی چاہیئے،آئی ایم ایف کا کہناہیکہ پاکستان،افغانستان اورخلیجی ممالک کے ریجن کی معاشی شرح نموصرف ایک فیصد رہیگی تاہم سال دوہزار بیس میں یہ بڑھ کر تین فیصد تک ہوسکتی ہے۔

تاریخ اشاعت : بدھ 24 جولائی 2019

Share On Whatsapp